in

حکومت نے الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے متعلق بل واپس لیا یا نہیں؟ بابر اعوان نے بتادیا

حکومت نے الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے متعلق بل واپس لیا یا نہیں؟ بابر اعوان نے بتادیا

حکومت نے الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے متعلق بل واپس لیا یا نہیں؟ بابر اعوان نے …

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن ) مشیر پارلیمانی امور بابر  اعوان نے کہا ہے کہ الیکٹرانگ ووٹنگ پر سٹیٹس کو خوفزہ ہے کیوں کی اس سے ان کی دھاندلی کا راستہ رک جائے گا اور اپوزیشن نے الیکٹرانک ووٹنگ کے حوالے سے منظور کئے گئے بل پر پڑھے بغیر اعتراض کیا ہے،دو دن میں جتنی بھی قانون سازی ہوئی ہے سب قوانین کے مطابق ہوئی ہے اور حکومت کسی قسم کا کوئی بل واپس نہیں لے گی۔

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بابر اعوان کا کہنا تھا کہ انتخابی اصلاحات پرحکومت کا موقف واضح ہے، حکومت الیکٹرانک ووٹنگ کے معاملے پر اس لئے سنجیدہ ہے ، اپوزیشن انتخابی اصلاحات سے بھاگنا چاہتی ہے، پاکستان کی پارلیمانی تاریخ میں ایک دن میں 12بلز کبھی پاس نہیں ہوئے ہیں،موجو دہ اپوزیشن دنیاکی تاریخ کی پہلی اپوزیشن ہے جس نے قانون سازی کا بائیکاٹ کیا۔

انکا کہنا تھا کہ جس دن پارلیمنٹ میں بلوں کو منظوری کے لئے پیش کیا گیا اس دن ہم نے قوانین کے مطابق کمیٹی سے آنے والے بلوں پر ووٹنگ کرائی اور اپوزیشن نے جان بوجھ کر تین دفعہ کورم کی نشاندہی کی لیکن کورم پورا تھا، اپوزیشن نے بلز کی منظور ی رکوانے کے لئے ڈپٹی سپیکر کی رولنگ کو بھی غلط قرار دی لیکن اس میں بھی انہیں ناکامی ہوئی، پھر کھڑے ہو کر ممبران کی گنتی گئی اور اس میں بھی حکومت کو کامیابی ملی۔

انہوں نے مزید کہا کہ پارلیمنٹ میں پارلیمانی کمیٹیوں کا بائیکاٹ کرنے والی شاید یہ پہلی اپوزیشن ہے،گزشتہ روزحکومت اور اپوزیشن کے درمیان ملاقات ہوئی ہے جس میں اہم وزرا شامل تھے،ملاقات کے آخر میں کہا گیا کہ حکومت بل واپس لے رہی ہے، لیکن ہم نے اپوزیشن کو بتادیا تھا کہ ہم کوئی بل واپس نہیں لیں گے اورسینیٹ میں بلوں کو متعلقہ کمیٹیوں کو بھیج دیا گیا ہے،اپوزیشن اگر سچ میں اپوزیشن کا کردار ادا کرتی تو بہت اچھا ہوتا،حزب مخالف کا نام حزب دشمنی نہیں ہوتا ۔

ان کا کہنا تھا کہ جنہوں نے جعلی ووٹ بنائے ہوئے ہیں وہ ای وی ایم سے خوفزدہ ہیں،مافیا جانتا ہے کہ ووٹنگ کا طریقہ کار تبدیل ہوگیا تو ا ن کا اسمبلی میں آنے کا راستہ رک جائے گا،پاکستان کے اندر پارلیمنٹ سپریم ہے کوئی آئینی عدالت بھی قانون نہیں بناسکتی،کون لوگ تھے جنہوں نے کچھ ماہ پہلے الیکشن کمیشن کے باہر نعر ے لگائے اور احتجاج کیا ،الیکشن کمیشن کے تحفظات اب حکومت کے پاس پہنچے ہیں،الیکشن کمیشن نے الیکٹورل ریفارمز پر کہا ہمیں اعتراضات ہیں، الیکشن کمیشن کو چاہیئے تھا کہ ہم سے پہلے بات کرتا ،کبھی کسی نے نہیں سوچا تھا کہ اوورسیز پاکستانیوں کو پاکستان کے نظام میں شریک اقتدار کیا جائے گا۔

مزید :

قومیسیاستعلاقائیاسلام آباد





Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

شہباز شریف کا سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کو خط اہم مطالبہ کردیا

شہباز شریف کا سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کو خط اہم مطالبہ کردیا

داسو ڈیم بننے سے سستی بجلی ملے گی، عمران خان

داسو ڈیم بننے سے سستی بجلی ملے گی، عمران خان