in

وزیرستان: لاشوں کے ہمراہ ایک اور دھرنا 3 دن سے جاری

وزیرستان: لاشوں کے ہمراہ ایک اور دھرنا 3 دن سے جاری

جنوبی وزیرستان کی تحصیل لدھا کے علاقے بی بی زئی راغزی میں فائرنگ سے جاں بحق ہونیوالے 2 نوجوانوں کی میتوں کو علاقہ مکینوں نے تحصیل بلڈنگ مکین کے سامنے رکھ کر 3 دن سے احتجاجی دھرنا دیا ہوا ہے۔

دھرنے میں شریک عمائدین کا کہنا ہے مطالبات کی منظوری تک دھرنا حتم نہیں کریں گے اور جب تک لواحقین کو انصاف نہیں ملتا میتوں کی تدفین بھی نہیں کی جائے گی۔

یاد رہے کہ 2 روز قبل لدھا کے نواحی علاقے میں نامعلوم افراد کی فائرنگ  سے دو نوجوان کلام الدین اور انعام اللہ جاں بحق جبکہ ایک نوجوان منصور احمد زخمی ہوا تھا۔

واقعے میں زخمی نوجوان نے اسپتال میں ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر شوکت علی کو بتایا کہ ہم تمام دوست سحری تک جاگتے ہیں، اس رات بھی معمول کے مطابق ایک دکان میں بیٹھے بات چیت میں مصروف تھے کہ اچانک فائرنگ شروع ہوگئی۔

زخمی نوجوان منصور کا کہنا ہے کہ واقعے کے بعد مجھے ایف سی کے جوانوں نے رزمک اسپتال پہنچایا۔ زخمی نوجوان کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

علاقہ کے ایک رہائشی مولوی شیر امان کا کہنا تھا کہ واقعہ 26 اپریل کو رات ایک بجے پیش آیا تھا۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ نوجوان بند دکانوں کے باہر انٹرنیٹ استعمال کررہے تھے کہ ان پر فائرنگ ہوئی۔

ممبر صوبائی اسمبلی جمعیت علماء اسلام مولانا اعصام الدین بھی دھرنے میں شریک ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ واقعے کی شفاف تحقیقات کے ساتھ ملوث افراد کو قانون کے کٹہرے میں لایا جائے تاکہ مستقبل میں ایسے واقعات سے بچا جاسکے۔

حکمران جماعت تحریک انصاف کے رکن اسمبلی نصیر اللہ خان وزیر نے بھی واقعے کی مذمت کرکے انتظامیہ سے ذمہ داران کی جلد گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

نوشہرہ میں ڈاکٹر اور نرسز کیخلاف تقاریر پر مفتی گرفتار

نوشہرہ میں ڈاکٹر اور نرسز کیخلاف تقاریر پر مفتی گرفتار

نوشہرہ میں فائرنگ سے 4خواتین سمیت 5افراد جاں بحق

نوشہرہ میں فائرنگ سے 4خواتین سمیت 5افراد جاں بحق