in

کیمبرج طلبہ کیجانب سے آن لائن امتحانات کی درخواست مسترد

کیمبرج طلبہ کیجانب سے آن لائن امتحانات کی درخواست مسترد

او اور اے لیول کے طلبا کی فزیکل امتحانات کے خلاف درخواست پر اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے فیصلہ سنادیا ہے۔عدالت نے کہا ہے کہ ایسے معاملات عدالت میں نہیں سنے جا سکتے۔

جمعہ کو اسلام آباد ہائیکورٹ میں کرونا کی وجہ سے او اور اے لیول کے طلبا کی فزیکل امتحانات کے خلاف درخواست پر سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دئیے کہ کوئی ہدایت جاری نہیں کرسکتے اور درخواست این سی او سی کو بھیج دیتے ہیں۔ عدالتوں کا کام نہیں کہ ملک کے پالیسی معاملات میں مداخلت کریں۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نےمزید کہا کہ آج تک کرونا سے متعلق جتنے معاملات آئے اس میں عدالت نے این سی او سی پالیسی کے فیصلوں میں مداخلت نہیں کی۔چیف جسٹس نےواضح کیا کہ ویسے بھی حکومت پاکستان کیمرج کو کوئی ہدایت جاری نہیں کرسکتی اورحکومت صرف ان امتحانات سے متعلق یہاں سہولت فراہم کرتی ہے۔

عدالت نے درخواست گزار کے وکیل سے استفسار کیا کہ کیا آپ چاہتے ہیں کہ  حکومت ان کوامتحان لینے سے روک دے۔ عدالت کو درخواست گزار وکیل نے بتایا کہ درخواست میں کوئی ایسی چیز نہیں مانگ رہے جو کیمرج کی پالیسی نہ ہو۔درخواست کیمرج کے خلاف نہیں بلکہ کیمرج نے 2 آپشن دئیے۔ سعودی عرب، تھائی لینڈ اور بھارت نےفزیکل کی بجائے آن لائن امتحان کےآپشن کو اپنایا ہے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ آپ کی پٹیشن میں 9 درخواست گزار ہیں،ہوسکتا ہے کہ باقی ہزاروں طلبہ فزیکل امتحان دینا چاہتے ہوں۔9 پٹیشنرہزاروں طلبہ کے نمائندے تو نہیں ہو سکتے۔چیف جسٹس نےمزید استفسار کیا کہ یہ کیسے بچے ہیں جوامتحانات نہیں دینا چاہتے۔

گذشتہ روز مریم نواز نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا تھا کہ طلبہ کو کيمبرج امتحانات دينے پر مجبور کرنا سمجھ سے بالاتر ہے۔ خطے کے ديگر ممالک نے کيمبرج امتحانات ملتوی کرديے ہيں۔ اميد ہے کہ عقل و حکمت سے کام لے کرطلبہ کو سنا جائے گا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

پنجاب میں کرونا ویکسینیشن سینٹرز کے اوقات تبدیل

پنجاب میں کرونا ویکسینیشن سینٹرز کے اوقات تبدیل

عمران اشرف کی ہوبہونقالی کرنے والی بچی

عمران اشرف کی ہوبہونقالی کرنے والی بچی