in

جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی براہ راست کوریج کی درخواست خارج

SCP

مقدمات کی براہ راست کوریج کا فیصلہ کرنا انتظامی معاملہ ہے عدالتی نہیں، سپریم کورٹ نے نظرثانی کیس براہ راست دکھانے کی جسٹس قاضی فائز عیسٰی کی درخواست خارج کردی۔ فل بینچ نے مختصر فیصلہ 4-6 کی اکثریت سے سنایا۔

سپریم کورٹ کے فل بینچ نے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی درخواست خارج کر دی جس میں نظرثانی کیس کی سماعت براہ راست دکھانے کی استدعا کی گئی تھی۔ عدالت نے فیصلے میں نظرثانی درخواست پر دلائل دینے کی ہدایت بھی کردی۔

سپریم کورٹ کے 10 رکنی فل بینچ نے 27 دن پہلے محفوظ کیا گیا فیصلہ 4-6 کی اکثریت سے سنایا۔ مختصر فیصلے میں قرار دیا گیا ہے کہ معلومات تک رسائی عوام کا بنیادی حق ہے، تاہم معلومات کس انداز میں پہنچانی ہیں یہ عدالتی نہیں بلکہ انتظامی معاملہ ہے۔

جسٹس مظہر عالم میاں خیل، جسٹس مقبول باقر، جسٹس منصور علی شاہ اور جسٹس منظور ملک نے فیصلے سے اختلاف کیا، براہ راست کوریج کی اجازت دیتے ہوئے سماعت کی آڈیو ریکارڈنگ بھی ویب سائٹ پر ڈالنے کی رائے دی۔

جسٹس فائز عیسٰی نے کہا فواد چوہدری کیخلاف توہین عدالت کی درخواست رجسٹرار نے مقرر نہیں کی، کیا عدالت رجسٹرار کے ماتحت ہے؟۔ جسٹس مقبول باقر نے کہا آپ اپنی درخواست پر دلائل دیں تب تک باقی درخواستیں بھی مقرر ہوجائیں گی۔

عدالت نے جسٹس فائز عیسیٰ کو دلائل کیلئے تیار رہنے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت بدھ تک ملتوی کردی۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

چینی اسکینڈل: جہانگیرترین کاایف آئی اے میں جواب جمع

چینی اسکینڈل: جہانگیرترین کاایف آئی اے میں جواب جمع

عمراکمل کی جرمانہ قسطوں میں ادا کرنے کی درخواست مسترد

عمراکمل کی جرمانہ قسطوں میں ادا کرنے کی درخواست مسترد