in

ڈسکہ الیکشن، پریزائیڈنگ افسران مشکوک جگہ پرکئی گھنٹے ساتھ رہے، رپورٹ

ڈسکہ الیکشن، پریزائیڈنگ افسران مشکوک جگہ پرکئی گھنٹے ساتھ رہے، رپورٹ

الیکشن کمیشن کی رپورٹ ميں انکشاف ہوا ہے کہ این اے 75 ڈسکہ کے ضمنی اليکشن ميں لاپتہ پریزائيڈنگ افسران مشکوک جگہ پر ایک ساتھ پائے گئے۔ جیو فینسنگ رپورٹ سپريم کورٹ ميں جمع کرا دی گئی۔ ليگی رہنماء نوشين افتخار کہتی ہيں رپورٹ سے ہمارا کيس مزيد مضبوط ہوگيا۔

ڈسکہ کے حلقہ اين اے 75 ميں دوبارہ انتخابات کے کیس میں حیرت انگیز انکشافات سامنے آئے ہیں۔ ضمنی انتخاب کے دوران لاپتہ ہونیوالے 20 پریزائيڈنگ افسران نے رات کہاں گزاری؟۔ الیکشن کمیشن نے سب پتہ لگالیا۔

سپریم کورٹ میں جمع کرائی گئی جیو فینسنگ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 20 میں سے 10 پریزائيڈنگ افسر ایک ہی مشکوک جگہ پر کئی گھنٹے ساتھ رہے۔

رپورٹ میں نقشوں کے ساتھ واضح کيا گيا ہے کہ پریزائيڈنگ افسران پولنگ اسٹیشن سے سیدھا ریٹرننگ افسر کے دفتر آسکتے تھے، اس کے برعکس وہ 7 بج کر 52 منٹ سے لے کر 9 بجے تک اپنے اپنے پولنگ اسٹیشنز سے روانہ ہوئے، رات 9:35 منٹ پر پريزائيڈنگ افسران کی اُس مشکوک مقام پر آمد شروع ہوئی جو ريٹرننگ افسر کے دفتر سے کئی کلومیٹر دور تھا۔

رپورٹ کے مطابق خاتون سمیت 10 پریزائيڈنگ افسران کئی گھںٹے تک مشکوک مقام پر اکٹھے موجود رہے، صبح طے شدہ راستے کے بجائے متبادل روٹ سے 6:48 پر ريٹرننگ افسر کے دفتر آمد شروع ہوئی۔

مسلم لیگ ن کی رہنماء اور این اے 75 سے امیدوار نوشين افتخار نے سماء سے گفتگو میں کہا کہ رپورٹ نے ہمارے مؤقف کی تائید کردی، امید ہے سپریم کورٹ کو فیصلہ کرنے میں آسانی ہوگی۔

ان کا کہنا ہے کہ سپريم کورٹ ميں جج صاحب نے ريمارکس دیئے تھے کہ کسی نہ کسی امیدوار کو نااہلی کی طرف جانا پڑے گا، ثبوت اس طرح کے آتے رہے تو ہوسکتا ہے یہی ہو۔

سپریم کورٹ کا 3 رکنی بینچ جمعرات کو ڈسکہ میں دوبارہ الیکشن سے متعلق کیس کی سماعت کرے گا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

خودکشی یا قتل? گھر سے دو کمسن بچوں اور والدین کی نعشیں برآمد

خودکشی یا قتل? گھر سے دو کمسن بچوں اور والدین کی نعشیں برآمد

چاند توڑ کر لانے والی مثال مذاق بن گئی ویڈیو دیکھیں

چاند توڑ کر لانے والی مثال مذاق بن گئی ویڈیو دیکھیں