in

خیرپور: 7 سالہ بچی کے ریپ اور قتل میں ملوث ملزمان پکڑے گئے

Child abuse Depression-TrinetteLucas-option 2-Sept 9

خيرپور ميں 7 برس کی بچی کے ریپ اور قتل ميں قریبی رشتہ دار ہی ملوث نکلے، قاتلوں سے ڈی اين اے ميچ کرگيا۔ پوليس نے دونوں ملزمان کو حراست ميں لے ليا۔ ايڈيشنل آئی جی کامران فضل کہتے ہيں کہ يہ ايک بلائنڈ مرڈر کیس تھا، جسے کامیابی سے حل کرليا گیا۔

مونيکا لاڑک ریپ اور قتل کيس ميں پيشرفت ہوئی ہے، سگا ماموں زاد بھائی واقعے ميں ملوث نکلا۔ ايڈيشنل آئی جی کامران فضل نے پريس کانفرنس ميں کيس حل کرنے کا اعلان کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ بچی کے جسم سے ملنے والے نمونوں سے کیس حل کرنے میں مدد ملی۔

کامران فضل نے مزید بتایا کہ عبداللہ لاڑک ولد زاہد لاڑک کا ڈی اين اے مقتولہ کے ساتھ میچ کرگیا، ملزم بچی کا قریبی رشتہ دار ہے، جس نے اپنا جرم قبول کرليا اور اپنے ساتھيوں کے نام بھی بتادیئے، واقعے میں ملوث دیگر 2 اور ملزمان بھی حراست میں لے لئے گئے۔

پوليس کا کہنا ہے ملزم کی بہن کو قتل کيا گيا تھا، جس کا اس نے معصوم مونيکا لاڑک سے بدلہ ليا۔ اے آئی جی کامران فضل نے بتایا کہ واقعہ اچانک نہیں ہوا بلکہ پوری منصوبہ بندی سے کیا گیا۔

بچی کے والد غلام شبیر نے پولیس کی تفتیش پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے فوج کی نگرانی میں دوبارہ ڈی این اے کروانے کا مطالبہ کردیا۔

خيرپور کے علاقے پير جو گوٹھ کی رہائشی مونيکا لاڑک کو 7 دن قبل ریپ کے گلا دبا کر قتل کردیا گیا تھا، مقتولہ کی لاش کيلے کے باغ ميں پھينک دی گئی تھی۔

حکام کے مطابق واقعے کی تحقيقات کیلئے پوليس نے ايک ہزار افراد کی جيو فينسنگ کی، 600 سے زائد خون کے نمونے لئے گئے، 150 افراد کی ڈی این اے سیمپلنگ کی گئی۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

ویڈیو: حريم شاہ نے مفتی قوی کو تھپڑ کیوں مارا؟

Corona vaccine

پاکستان کومفت کروناویکسین مارچ تک ملنا شروع ہوگی، یاسمین راشد