in

وزیراعظم کیطرف سےفنڈز کے اجرا کیخلاف پی پی کی درخواست مسترد

وزیراعظم کیطرف سےفنڈز کے اجرا کیخلاف پی پی کی درخواست مسترد

الیکشن کمیشن نے وزیراعظم عمران خان کی جانب سے ارکان اسمبلی کو فنڈز دینے کے معاملے پر پیپلز پارٹی کی درخواست مسترد کردی۔

پاکستان پیپلزپارٹی کی جانب سے نئیر بخاری نے الیکشن کمیشن میں درخواست دائر کی تھی۔ آج بروز منگل 16 مارچ کو ممبر الیکشن کمیشن خیبرپختونخوا ارشاد قیصر کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے سماعت کی۔

سماعت کے آغاز میں ممبر سندھ نثار درانی نے نیئر بخاری سے سوال کیا کہ آپ کی درخواست سینیٹ الیکشن سے متعلق تھی۔ جس پر نیئر بخاری نے کہا کہ وزیراعظم نے سینیٹ انتخابات کے دوران ارکان کو فنڈز جاری کر کے کرپٹ پریکٹس کی۔ وزیراعظم نے ہر رکن کو 50 کروڑ روپے کے فنڈز دینے کی یقین دہانی کروائی تھی۔

الیکشن کمیشن نے نئیربخاری سے استفسار کیا کہ یہ کیس سپریم کورٹ میں بھی تھا اس کا کیا بنا؟ ، جس پر نیئر بخاری نے کمیشن کو بتایا کہ وہاں حکومت نے فنڈز کے اجرا کی خبر کو غلط قرار دیا تھا۔ سینیٹ الیکشن سے قبل ارکان اسمبلی کو فنڈز کی صورت میں رشوت دی گئی۔ وزیراعظم کی جانب سے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی گئی۔ جواب پر ممبر بلوچستان نے کہا کہ ضابطہ اخلاق میں صرف صدر اور گورنرز کا ذکر ہے، وزیراعظم کا نہیں۔

کمیشن کے سامنے درخواست گزار نے کہا کہ وزیراعظم کا ارکان کو فنڈز دینے کا اعلان رشوت دینے کے زمرے میں آتا ہے۔ وزیراعظم نے آرٹیکل 181 کی خلاف ورزی کی، جس پر سزا دی جا سکتی ہے۔ وزیراعظم کا کوڈ آف کنڈکٹ کیخلاف ورزی الیکشن کمیشن کی توہین کے مترادف ہے۔ الیکشن کمیشن خلاف ورزی پر3 سال سزا اور ایک لاکھ تک جرمانہ عائد کرسکتا ہے۔ وزیراعظم کے اعلان پر الیکشن کمیشن ازخود نوٹس لینے کا اختیار رکھتا ہے۔

سماعت کے دوران ممبر الیکشن کمیشن نے ریمارکس دیئے کہ آپ کو چاروں ارکان قومی اسمبلی کو کیس میں فریق بنانا چاہیے تھا۔ جواباً نیئر بخاری نے کہا کہ الیکشن کمیشن چاروں ارکان قومی اسمبلی کو کیس میں فریق بنا سکتا ہے۔ یوسف رضا گیلانی کیس میں بھی الیکشن کمیشن یوسف رضا گیلانی اور علی حیدر گیلانی کو فریق بنا چکا ہے۔

ای سی بی ممبر نے سوال کیا کہ کیا عمران خان کو کیس میں بطور وزیراعظم فریق بنایا گیا یا بطور سربراہ سیاسی جماعت؟ ، کوڈ آف کنڈکٹ میں سیاسی جماعتوں کی بات کی گئی وزیر اعظم کی نہیں۔

ممبران کے سوال پر پی پی رہنما نے بتایا کہ الیکشن تاریخ کے اعلان کے بعد کوئی ترقیاتی کام کرانے کا اعلان نہیں کیا جا سکتا۔ الیکشن کمیشن وزیراعظم کو بلا کر فنڈز دینے کے بیان پر وضاحت طلب کرے۔

الیکشن کمیشن نے کچھ دیر کیلئے فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے درخواست کو قابل سماعت قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

نور بخاری کے سابق شوہر ولی حامد نے بھی شادی کرلی تصاویر سامنے آگئیں

نور بخاری کے سابق شوہر ولی حامد نے بھی شادی کرلی تصاویر سامنے آگئیں

سندھ کے تعليمی اداروں ميں کرونا کيسز بڑھنے لگے

سندھ کے تعليمی اداروں ميں کرونا کيسز بڑھنے لگے