in

پاکستان میں ڈرون کی تیاری شروع کرنا ضروری ہے، فوادچوہدری

پاکستان میں ڈرون کی تیاری شروع کرنا ضروری ہے، فوادچوہدری

فوادچودھری نےبتایا ہے کہ ڈرون اتھارٹی بنانےکامقصد تمام اداروں کو ایک چھت تلےلاناہے اورزراعت کی بہتری کیلئےجدیدفارمنگ پرجاناہوگا۔

اسلام آباد میں اتوار کو وزیرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی فوادچودھری نےڈرون پالیسی کےمتعلق بات کرتےہوئے کہا ہے کہ ڈرون پالیسی تاریخی اہمیت کامسودہ ہے۔انھوں نے بتایا کہ پاکستان کے پاس 2003 سے ڈرون بنانےکی صلاحیت ہے تاہم پہلےصرف ملٹری ڈرون بنائےجارہے تھے۔اس وقت پوری دنیا میں زراعت ڈرون پر منتقل ہورہی ہے۔فصلوں کی مانیٹرنگ اور اسپرے ڈرون پر منتقل ہوچکی ہے۔اس لئےضروری ہےکہ ڈرون کی تیاری پاکستان میں شروع کی جائے۔

 ایک روز قبل وزیراعظم عمران خان نے ملک بھر میں ڈرون کےاستعمال سےمتعلق سول ڈرون اتھارٹی کے قیام کی منظوری دیدی ہے۔سیکریٹری ایوی ایشن ڈویژن اتھارٹی کے سربراہ ہوں گے۔ دیگر ممبران میں ائیرفورس، سول ایوی ایشن، دفاعی پیداوار، داخلہ اور وزارتِ سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے سینیر لیول افسران شامل ہوں گے۔

تمام وفاقی اکائیوں بشمول آزاد جموں و کشمیر اور گلگت بلتستان سے بھی ایک ایک نمائندہ شامل ہوگا۔ اس کے علاوہ شعبے کے تین ماہرین بھی اتھارٹی کا حصہ ہوں گے۔ اتھارٹی میں تمام متعلقین کی شمولیت اتھارٹی کے فرائض کی انجام دہی اور اداروں کے درمیان بہترین کوارڈینیشن میں معاون ثابت ہوگی۔

سول ڈرون اتھارٹی کےقیام کا مقصد ملک میں ڈرون ٹیکنالوجی کا فروغ، ڈویلپمنٹ اور اس اہم شعبے کو ریگولیٹ کرنا ہے۔ سول ڈرون اتھارٹی کے پاس ڈرون ٹیکنالوجی کو ریگولیٹ کرنے، لائسنسوں کا اجراء، امپورٹ اور ملک میں پیداوار کی اجازت دینے کے اختیارات ہوں گے۔

اتھارٹی ڈرونزکی مینوفیکچرنگ، آپریشنز، ٹریننگ اور ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ کے حوالے سے ذمہ داریاں سر انجام دے گی، جب کہ جرمانے اور سزا، لائسنسوں کی تنسیخ اور قانونی چارہ جوئی کے اختیارات بھی اسی مجاز اتھارٹی کے پاس ہونگے۔

وزیرِاعظم عمران خان نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ڈرون ٹیکنالوجی کو کمرشل، ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ، ایگرکلچر و دیگر پرامن مقاصد کیلئے برؤے کار لانا وقت کی اہم ضرورت ہے۔ڈرون ٹیکنالوجی سے متعلق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اتھارٹی کے قیام سے نہ صرف اس حوالے سے موجود خلا کو پر کیا جا سکے گا، جو ڈرون کے حوالے سے کوئی قانون نہ ہونے کی وجہ سے موجود ہے، بلکہ یہ اتھارٹی ڈرون ٹیکنالوجی کے فروغ اور اس کی ملک میں پیداوار میں بھی اہم کردار ادا کرے گی۔ ڈرون ٹیکنالوجی کے موثر استعمال سے وسائل کا موثر استعمال اور سروس ڈیلیوری میں بہتری میں مدد ملے گی۔

اتھارٹی کو ہدایت دیتے ہوئےعمران خان کا کہنا تھا کہ اس حوالے سے قانون سازی کے عمل کو ترجیحی بنیادوں پر مکمل کیا جائے اور کابینہ کی منظوری کے بعد بل کو پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

چیئرمین سینیٹ کا انتخاب،ووٹ مستردہونے پرپی پی پی کی قانونی ٹیم تشکیل

چیئرمین سینیٹ کا انتخاب،ووٹ مستردہونے پرپی پی پی کی قانونی ٹیم تشکیل

پاکستان میں حجاموں کی کتنی دکانیں ہیں اور ماہانہ کتنی آمدن ہوتی ہے؟ جواب آپ کے تمام اندازے غلط ثابت کردے

پاکستان میں حجاموں کی کتنی دکانیں ہیں اور ماہانہ کتنی آمدن ہوتی ہے؟ جواب آپ کے تمام اندازے غلط ثابت کردے