in

وفاقی کابینہ کااجلاس: اسٹیٹ بینک ترمیمی بل 2021ء کامسودہ منظور

وفاقی کابینہ کااجلاس: اسٹیٹ بینک ترمیمی بل 2021ء کامسودہ منظور

وفاقی وزیراطلاعات و نشریات شبلی فراز نے بتایا ہے کہ وفاقی کابینہ نے اسٹیٹ بینک کے ترمیمی بل 2021ء کے مسودے کی منظوری دیدی۔ عبدالحفیظ شیخ کہتے ہیں کہ اسٹیٹ بینک کو پارلیمنٹ کے سامنے جوابدہ کیا جارہا ہے۔

وفاقی وزیر اطلاعات نشریات شبلی فراز نے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں کئے گئے فیصلوں کے حوالے سے منگل کو اسلام آباد میں صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ کابینہ نے اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے ترمیمی بل 2021ء کے مسودے کی منظوری دیدی۔ ان کا کہنا ہے کہ بل کا مقصد ملکی معیشت میں بہتری لانے کیلئے اسٹیٹ بینک کو مزید خودمختار بنانا ہے۔

وفاقی کابینہ نے انکم ٹیکس ترمیمی بل 2021ء کے مسودے کی بھی منظوری دیدی۔ کابینہ نے چیئرمین براڈ شیٹ کمیشن جسٹس (ر) عظمت سعید کی طرف سے کسی قسم کی مراعات نہ لینے کے فیصلے کا خیرمقدم کیا۔

شبلی فراز کا کہنا تھا کہ مؤثر اقدامات کی وجہ سے ہم سرکاری اداروں کے نقصانات کو 50 فیصد تک کم کرنے میں کامیاب رہے ہیں، کابینہ نے اداروں کو آئندہ چند برسوں میں منافع بخش بنانے کی اُمید کا بھی اظہار کیا ہے۔

پریس بریفنگ کے دوران وفاقی وزیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے کہا کہ قومی اداروں کا استحکام حکومت کی اولین ترجیح ہے تاکہ انہیں خودمختار بنایا جاسکے، اداروں کو منافع بخش بنانے کیلئے تیزی سے اصلاحات کی جارہی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اسٹیٹ بینک کو خود مختار بنایا جائے گا، اس کا مرکزی کام ملک میں مہنگائی کم کرنا ہوگا اور اسٹیٹ بینک کو پارلیمنٹ کے سامنے جوابدہ کیا جارہا ہے جبکہ اسٹیٹ بینک گورنر کی مدت میں 5 سال کا اضافہ ہوگا، وفاقی حکومت اسٹیٹ بینک سے قرضے لینا بند کرے گی، حکومت اپنے ذرائع اور کوششوں سے پیسہ بنائے گی۔

وزیرخزانہ نے کہا کہ انکم ٹیکس ترمیمی بل 2021ء سے ٹیکس نظام میں بہتری لانے میں مدد ملے گی، اس بل کے تحت ٹیکسوں کے نظام کو یکساں اور شفاف بنانے کیلئے ٹیکس استثنیٰ میں کمی کی جائے گی، حکومت نے آئی ایم ایف کے ساتھ باضابطہ تعلقات کا دوبارہ آغاز کیا ہے اور جلد ہی فنڈ کا بین الاقوامی بورڈ پاکستان کا دورہ کریگا۔

ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ کا کہنا ہے کہ افراط زر کو قابو کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات کئے جارہے ہیں، اس ضمن میں حکومت نے پہلے اپنے اخراجات کم کئے ہیں اور طویل عرصے کے بعد ہم ملک کے ابتدائی توازن کو مثبت کرنے میں کامیاب رہے ہیں۔

اس موقع پر ادارہ جاتی اصلاحات اور کفایت شعاری کے بارے میں وزیراعظم کے مشیر ڈاکٹر عشرت حسین نے کہا کہ ادارہ جاتی اصلاحات وقت کی اہم ضرورت ہیں اور ہم درست کام کیلئے درست شخص کے اصول کے تحت اداروں کی کارکردگی بہتر بنانے پر توجہ مرکوز کررہے ہیں، سرکاری اداروں کے نقصانات کو مزید کم کرنے کیلئے اقدامات کررہے ہیں۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

فواد احمد کی کرونا ٹیسٹ مثبت آنےکی تردید

فواد احمد کی کرونا ٹیسٹ مثبت آنےکی تردید

NEPRA

بجلی کی قیمت میں اضافہ، صارفین 7ارب اضافی ادا کرینگے