in

آپ کس طرح اپنے علاقوں میں آوارہ کتوں کو بچاسکتے ہیں؟

آپ کس طرح اپنے علاقوں میں آوارہ کتوں کو بچاسکتے ہیں؟

کیا آپ کو کتوں سے ڈر لگتا ہے؟، کیا آپ اپنے علاقے میں آوارہ کتوں کی تعداد میں اضافے سے خوفزدہ ہیں؟، اگر ہاں تو ایک کام جو آپ کو ہرگز نہیں کرنا چاہئے وہ ہے ان کا قتل۔
کراچی میں آوارہ کتوں کی تعداد میں اضافے اور کتوں کے کاٹنے کی خبریں عام طور پر ملک میں خوف، تذبذب اور کتوں کیخلاف نفرت کا باعث بنتی ہیں۔ لیکن آوارہ کتوں کی تعداد سے متعلق کچھ ابہام ہیں۔
جانوروں کے حقوق کی سرگرم کارکن اور عائشہ چندریگر فاؤنڈیشن کی بانی، عائشہ چندریگر نے سماء ڈیجیٹل سے گفتگو میں کہا کہ اول تو، کتے آپ پر حملہ نہیں کریں گے جب تک کہ وہ متحرک یا زخمی نہ ہوں، حالیہ سالوں میں ہم نے سرکاری حکام کی جانب سے متعدد بار قتل عام کی مہمات دیکھی ہیں لیکن آوارہ کتوں کی آبادی اب بھی ویسی ہی ہے۔
انہوں نے کہا کہ کتوں کے اپنے علاقے ہوتے ہیں اور جب وہ دیکھتے ہیں کہ ان کی نسل میں کمی آرہی ہے تو وہ جلدی سے جنسی تعلق قائم کرتے ہیں، یہ بقاء کی جنگ کی طرح ہے۔
عائشہ چندریگر کا مزید کہنا تھا کہ اس سے ثابت ہوتا ہے کہ کتوں کو مارنا کسی کے مفاد میں نہیں، یہ صرف قتل ہے، پاکستان میں کتوں کو زہر دیکر قتل کیا جاتا ہے، ایسے کتوں کے پیر باندھ کر انہیں گولی مار کر ہلاک کیا جاتا ہے یا زہر دیکر۔ انہوں نے کہا کہ گولی ماری جائے یا زہر دیا جائے، ان جانوروں کیلئے موت کبھی بھی آسان نہیں ہوتی۔
آوارہ کتوں کی تعداد میں کمی کا بہتر طریقہ انہیں خصی کرنا اور ویکسین لگانا ہے۔ عائشہ چندریگر نے بتایا کہ اگر آپ کے علاقے میں آوارہ کتے ہیں تو آپ کو کیا کرنا چاہئے۔
اگر آپ کے پڑوس میں کوئی بھی جانوروں سے ڈرتا ہے تو آپ کو اس سے بات کرکے یقین دلانا چاہئے کہ پریشان ہونے کی ضرورت نہیں۔ یہ کتے دوستانہ ہیں اور آپ پر حملہ نہیں کریں گے جب تک کہ آپ پہل نہ کریں۔
ان کیخلاف جارحانہ نہ ہوں، اگر آپ غصہ ہوتے ہیں تو انہیں احساس ہوجائے گا اور وہ صرف خود کو بچانے کی کوشش کریں گے۔
کتوں کو کھانا کھلائیں اور ان کے ساتھ دوستانہ ہوجائیں، انہیں اپنی بو سے مانوس کریں۔
صرف دو طرح کے کتنے پرتشدد ہوتے ہیں: مائیں اور الفا میل۔ اگر آپ اپنے علاقے میں مشتعل کتوں کو دیکھیں تو اے سی ایف یا ریبیز فری پاکستان کو کال کریں۔ وہ آکر کتے کو پکڑیں گے، اسے خصی کریں گے اور کسی دوسرے علاقے میں چھوڑ دیں گے۔
گزشتہ تین سال کے دوران ریبیز فری پاکستان (آر ایف پی) نے کراچی کے مختلف علاقوں میں 35 ہزار سے زائد آوارہ کتوں کو ویکسین لگائی اور 3200 کو جراثیم سے پاک کیا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

ٹویوٹا کمپنی کے منافع میں ایک بار پھر اضافہ

ٹویوٹا کمپنی کے منافع میں ایک بار پھر اضافہ

پی ايس ايل 6کا ترانہ، شعيب اختر کے بچے ڈرگئے؟

پی ايس ايل 6کا ترانہ، شعيب اختر کے بچے ڈرگئے؟