in

وفاقی کابینہ کی افغان تجارتی معاہدے میں توسیع کی منظوری

وفاقی کابینہ کی افغان تجارتی معاہدے میں توسیع کی منظوری

وفاقی کابینہ نے افغان تجارتی معاہدے کی منظوری دیدی، جو جمعرات (11فروری) سے نافذ العمل ہوگا۔ وفاقی وزیر منصوبہ بندی و ترقیات اسد عمر کا کہنا ہے کہ حکومت آئین کے دائرے میں رہتے ہوئے ایوان بالا (سینیٹ) کے آئندہ انتخابات میں شفافیت لانے اور ہارس ٹریڈنگ کے خاتمے کیلئے ہر ممکن اقدام کرے گی۔

وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز کے ہمراہ پریس کانفرنس میں وفاقی وزیر منصوبہ بندی شبلی فراز نے کابینہ اجلاس کے فیصلوں سے متعلق تفصیلی بریفنگ دی۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف نے سینیٹ کے انتخابات اوپن بیلٹ کے ذریعے کروانے کیلئے قومی اسمبلی میں آئینی ترمیم کیلئے بل پیش کیا ہے، حکومت نے سپریم کورٹ میں صدارتی ریفرنس بھی دائر کردیا، جس میں سینیٹ انتخابات سے متعلق قانون پر نظرثانی کرنے کی اپیل کی گئی ہے۔

اسد عمر نے بتایا کہ ریفرنس میں عدالت سے رائے مانگی گئی ہے کہ آیا سینیٹ انتخابات ہاتھ اٹھا کر یا خفیہ رائے شماری کے ذریعے کروائے جائیں، حکومت اس سلسلے میں عدالت عظمیٰ کے فیصلے کا احترام کرے گی۔

وزیر اطلاعات سید شبلی فراز نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کابینہ نے افغان پاکستان تجارتی راہداری کے معاہدے کو 3 ماہ تک توسیع دینے کی منظوری دی ہے جو جمعرات سے نافذالعمل ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ کابینہ نے غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ پر اظہار برہمی کرتے ہوئے متعلقہ حکام کو اسے ہنگامی طور پر ختم کرنے کی ہدایت کی ہے۔ ملک میں مہنگائی پر قابو پانے سے متعلق اقدامات کا تذکرہ کرتے ہوئے شبلی فراز کا کہنا تھا کہ مارکیٹ کمیٹیاں ختم کردی گئی ہیں اور ضلعی انتظامیہ کو عوام کو اشیائے ضروریہ کی قیمتوں پر قابو پانے کی ہدایت کی گئی ہے۔
انہوں نے کہا کہ اجلاس کو بریفنگ میں بتایا گیا ہے کہ پیٹرول کی اسمگلنگ کے خاتمے کیلئے مؤثر اقدامات کئے گئے ہیں جس کے نتیجے میں محاصل میں 120 ارب روپے کے خسارے پر قابو پانے میں مدد ملی ہے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

گھرکے شیر، گھرمیں بھی ڈھیر، انگلینڈ کے ہاتھوں شکست

گھرکے شیر، گھرمیں بھی ڈھیر، انگلینڈ کے ہاتھوں شکست

ویڈیو: صدر مملکت کا بی آرٹی پشاور کا سفر

ویڈیو: صدر مملکت کا بی آرٹی پشاور کا سفر