in

سب کے سافٹ ویئر اپ ڈیٹ ہوں گے، فیصل واوڈا

سب کے سافٹ ویئر اپ ڈیٹ ہوں گے، فیصل واوڈا

رہنما تحریک انصاف فیصل واوڈا کا کہنا ہے کہ سیاستدانوں کو وہ کام ہی نہیں کرنا چاہیے جس کی وجہ سے ان کے سافٹ ویئر اپ ڈیٹ کرنے کی نوبت آئے۔
سماء کے پروگرام ندیم ملک لائیو میں گفتگو کرتے ہوئے فیصل واوڈا کا کہنا تھا کہ اگر تحریک انصاف کا کوئی ممبر خواجہ آصف یا مسلم لیگ ن کی طرز پر سیاست کرے گا تو اس کا بھی سافٹ ویئر اپ ڈیٹ ہوگا۔
سینیٹر فیصل واوڈا کا کہنا تھا کہ حکومت وقت صرف چوری اور چوروں کی نشاندہی کرسکتی ہے وہ عدالت نہیں کہ وہ فیصلے صادر کرسکے۔
انہوں نے کہا کہ اگر ایف آئی اے شہبازشریف کو سوالات پہلے دیتے ہیں تو مجھے اس طریقہ کار سے اختلاف ہے اداروں کو چاہیے کہ تمام افراد کو چاہے غریب ہو یا امیر ہتھکڑی لگاکر تحقیقات کرے۔
رہنما تحریک انصاف کا کہنا تھا کہ نوازشریف دور میں بجلی کے مہنگے معاہدے کیے اور جو چیز دنیا میں 4 روپے کی دستیاب تھی ہم نے 15 سالہ معاہدہ پر 20 روپے کی خرید لی۔
فیصل واوڈا کا کہنا تھا کہ ٹرانسمیشن لائن موجود نہیں تھی لیکن ہم نے بجلی کے معاہدے کر لیے جبکہ پچھلے 40 سال سے سستی بجلی کسی منصوبے پر کوئی کام نہیں ہوسکا۔
آزاد کشمیر الیکشن مہم میں نامناسب بیانات پر تبصرہ کرتے ہوئے فیصل واوڈا کا کہنا تھا کہ عزت دیں گے تو بدلے میں عزت ملی گی لیکن اگر کوئی گالیاں دیتا ہے تو وہ ہر کوئی برداشت نہیں کرسکتا لہٰذا علی امین گنڈاپور کے بیانات مریم نواز کی تقاریر کا ردعمل ہیں۔
پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما پیپلزپارٹی نبیل گبول کا کہنا تھا کہ نیب قوم کو بتائے کہ جس رقم کی ریکوری کا دعویٰ کیا جارہا ہے وہ کس سے کس کیس میں ریکور کی گئی ہے۔
نبیل گبول کا کہنا تھا کہ پلی بارگینگ کا مطلب یہ ہے کہ چور مان لیتا ہے کہ میں نے چوری کی ہے لہٰذا ایسے لوگوں کو قوم کے سامنے پیش کیا جائے اور بتایا جائے کہ ان کا تعلق کس سیاسی لیڈر سے ہے۔
انہوں نے کہا کہ چیئرمین نیب نے جو 33 ارب روپے ریکور کیے ہیں وہ پیسے کہاں ہیں اور اگر وہ یہ نہیں بتاسکتے تو اس کا مطلب چوروں سے پیسے ریکور کرکے اپنے جیب میں ڈال لیے۔
نبیل گبول کا کہنا تھا کہ سسٹم میں بہت سے وائرس آگئے ہیں اور وقت بدل رہا ہے جو سب کے سافٹ ویئر اپ ڈیٹ کرتے تھے اب ان کا سافٹ ویئڑ اپ ڈیٹ ہورہا ہے۔
انہوں نے کہا کہ علی امین گنڈاپور کو وزارت اس لیے دی گئی کیوں کہ جو جتنا بدتمیز ہوتا ہے عمران خان کو وہ اتنا ہی پسند آتا ہے، عمران خان کو سوچنا چاہیے کہ کس قسم کے آدمی کو میدان میں بھیجا ہے۔
پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما ن لیگ ملک احمد خان کا کہنا تھا کہ نیب کے قانون پلی بارگینگ کا طریقہ کار یہ ہے کہ جب کوئی کہے کہ میرے خلاف مقدمہ نہ چلائے اور میں پیسے واپس کرتا ہوں تو اس کے لیے عدالت سے اجازت لینی ہوتی ہے۔
ملک احمد خان کا کہنا تھا کہ یہ بھی دیکھنا ہے کہ ریکور کیے گئے پیسے سندھ حکومت کے کن منصوبوں سے وصول کیے گئے اور بے قاعدگی کہاں کہاں ہوئی۔
رہنما ن لیگ کا کہنا تھا کہ ضمانت کے بعد اپوزیشن رہنما ایک مشکل صورتحال سے گزر کر آتے ہیں اور حکومتی رہنما اس پر طنز کررہے ہوتے ہیں۔
مسلم لیگ میں وزارت عظمیٰ کے لیے متعدد امیدوار ہونے کی خبروں پر تبصرہ کرتے ہوئے ملک احمد خان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ کو اگر مینڈیٹ ملتا ہے تو وزارت عظمیٰ کے امیدوار شہبازشریف ہی ہوں گے۔
انہوں نے کہا کہ علی امین گنڈپور کا مریم نواز پر ذاتی حملہ قابل مذمت ہے اور اگر مہم میں دونوں طرف سے کوئی متنازع مسئلہ چل رہا ہو جس سے کمشیر کاز کو نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہو تو اسے بھی روکنا چاہیے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

ویڈیو: علی امین گنڈاپور کے ذوالفقارعلی بھٹو اور نوازشریف پروار

ویڈیو: علی امین گنڈاپور کے ذوالفقارعلی بھٹو اور نوازشریف پروار

گڈاپ کے فارم ہاؤس کے پانی سے کلورین غائب

گڈاپ کے فارم ہاؤس کے پانی سے کلورین غائب