in

ہاکس بے ساحل پر بنے ہٹس مسمار کرنے کا فیصلہ

ہاکس بے ساحل پر بنے ہٹس مسمار کرنے کا فیصلہ

سندھ حکومت نجی سرمایہ کاروں کو ہاکس بے ساحل پر 3 اسٹار ہوٹلوں اور ہٹس کرنے کے لئے مدعو کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے جس کے لئے اس نے ساحل پر موجود 254 ہٹس کی لیز منسوخ کردی گئی ہیں اور انہیں خالی کروا کر مسمار کردیا جائے گا۔

ساحل سمندر پر کے ایم سی کی اس پٹی کی لمبائی 5 کلومیٹر ہے اور اس کا کل رقبہ تقریبا 387 ایکڑ بنتا ہے کے جبکہ اس سے متصل ساحلی حصے کے پی ٹی اور بورڈ آف ریونیو کی ملکیت ہیں۔ ساحلی زمین پر اے، اے ون اور ایس سیریز میں منقسم ہے اور ان میں سے اے سیریز میں وہ پلاٹس شامل ہیں جو عین سامنے کی طرف ہیں جبکہ دیگر دو سیریزاس کے عقب میں ہیں۔

حکومت سندھ کے پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ یونٹ کے ڈائریکٹر جنرل خالد محمود شیخ نے تصدیق کی ہے کہ اس ترقیاتی منصوبے پر عملدرآمد ان کا یونٹ کرے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ کہ حکومت ساحل سمندر کی ترقی کے لئے فیزیبلٹی پلان تیار کرنے کے لئے ایک کسلٹنٹ کی خدمات حاصل کرے گی۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ ایک طویل عمل ہے اور اس کی تیاری میں کم از کم 6 ماہ لگ جائیں گے۔

سندھ حکومت میں پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ یونٹ انفرا اسٹرکچر کی تعمیر کے لیے نجی سرمایہ کاروں کی خدمات حاصل کرتا ہے۔ پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت ہونے والے ترقیاتی کاموں کا طریقہ کار حکومت کے ان منصوبوں سے مختلف ہوتا ہے جس کے تحت وہ خود پیسہ لگا کر کوئی پراجیکٹ تعمیر کرتی ہے۔ مثال کے طور پر پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ میں اگر کوئی موٹروے بنتا ہے تو اس کے لیے متعلقہ پرائیوٹ کمپنی خود پیسہ لگاتی ہے جسے وہ گاڑیوں پر ٹول ٹیکس لگا کر وصول کرتی ہے جبکہ اس میں حکومت کا کردار ایک نگران کے طور پر ہوتا ہے۔

ہاکس بے کے منصوبے کے لیے حکومت اس کی لاگت کا تخمینہ اور اسٹڈی رپورٹ تیار کرے گی جس کے بعد سرمایہ کاری کے لیے ٹینڈر طلب کیے جائیں گے اور پھر پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ یونٹ کا پالیسی بورڈ موزوں سرمایہ کار کا انتخاب کرے گا۔

خالد محمود شیخ کے مطابق منصوبے کا مقصد لوگوں کو ساحل پر ان سہولیات کی فراہمی ہے جو دیگر ممالک میں میسر ہیں۔
ان کا کہنا تھا کہ یہ سہولیات پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ یونٹ کے اس منصوبے کے تحت لوگوں کو کراچی میں ہی میسر ہونگی اور انہیں صاف ستھرے ساحل سے لطف اندوز ہونے کے لئے تھائی لینڈ اور دیگر ممالک جانے کی ضرورت پیش نہیں آئے گی۔

کے ایم سی کے ایڈمنسٹریٹر لئیق احمد نے بتایا کہ ساحل سمندر کی سائٹس کی قیمت کا تخمینہ لگانے کے لیے ایک چارٹرڈ اکاونٹ نٹینسی فرم کی خدمات حاصل کی جائیں گی۔

ہاکس بے پر ترقیاتی منصوبے کی بنیادی وجہ



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

پاکستان نے آئی ٹی کمپنیوں کی رجسٹریشن فیس ختم کردی

پاکستان نے آئی ٹی کمپنیوں کی رجسٹریشن فیس ختم کردی

جماعت اسلامی آج کراچی میں 50 مقامات پر احتجاج کریگی

جماعت اسلامی آج کراچی میں 50 مقامات پر احتجاج کریگی