in

شہبازاورحمزہ کی ضمانتیں،گزشتہ سماعت کا تحریری فیصلہ جاری

شہبازاورحمزہ کی ضمانتیں،گزشتہ سماعت کا تحریری فیصلہ جاری

لاہور سيشن کورٹ نے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی ایف آئی اے مقدمات میں عبوری ضمانتوں کی گزشتہ سماعت کا تحریری فیصلہ جاری کرديا ہے۔

لاہور سیشن کورٹ نے ایف آئی اے کو شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی گرفتاری سے 2 اگست تک روک دیا ہے۔

بیکنگ کورٹ کے ڈیوٹی جج  سید عباس علی کی جانب سے جاری 2 صفحات پر مشتمل تحریری فیصلے میں بتایا گیا ہے کہ تفتیشی افسر کے مطابق شہباز شریف اور حمزہ شہباز نے تفتیش جوائن کرلی ہے اور دونوں ملزمان کے خلاف تحقیقات ابھی جاری ہيں۔

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ درخواست گزار کے وکیل نے بتایا کہ شہبازشریف اور حمزہ شہباز نے اپنا تحریری جواب ایف آئی اے میں جمع کرادیا ہے لہذا انصاف کی بنیاد پر مبنی تحقیقات کی جائيں۔

عدالت نے تفتیشی افسر کو ہدایت کی کہ آئندہ سماعت تک مقدمے کی تفتیش مکمل کرے ۔عدالت نے آئندہ سماعت پرفریقین کے وکلا کو ضمانت پر دلائل دینےکےلیےطلب کرلیا ہے۔

اس سے قبل شہباز شریف نے منی لانڈرنگ کیس میں ایف آئی اے کی تفتيشی ٹیم ہر ہراساں کرنےکا الزام عائد کیا۔ شہبازشریف نے کہا کہ میں نے شوگر ملز میں اپنی فیملی کے اربوں روپے کا نقصان کیا اور خاندان کی مخالفت کے باوجود عوام کيلئے سستی چینی دی۔

شہبازشریف نے کہا کہ نیب کے بعد اب ایف آئی اے کو وہی کیسز دے دیے گئے اور دوران تفتیش ایف آئی اے میں بدتمیزی ہوئی ہے۔ ایف آئی اے کے اہلکاروں نے بيہودہ گفتگو کی اورجب مجھ سے برداشت نہ ہوا  تو میں کھڑا ہو کر بولا کہ میرے ساتھ ایسا کیوں کررہے ہو۔ اس دوران ایف آئی اے کےافسران اونچی اونچی آواز میں ہنس کر مذاق اڑاتے رہے۔

ایف آئی اے نے شہبازشریف کے الزامات پر ردعمل کا اظہار کیا ۔ ترجمان ایف آئی اے نے بتایا ہے کہ تفتیشی ٹیم شہبازشریف کو احترام سے میاں صاحب کہہ کرمخاطب کرتی رہی اور شہبازشریف کو پینے کے لیے کافی کی پیشکش کی گئی۔ ترجمان نے بتایا کہ شہبازشریف نے سوالات کےغیرسنجیدہ اورغیرمتعلقہ جوابات دیے۔ شہبازشریف نے درخواست کی کہ سوالات اور جوابات کو سامنے نہ لایا جائے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

مون سون اسپیل: آبی ذخائر میں اضافہ

مون سون اسپیل: آبی ذخائر میں اضافہ

ہاکی اولمپیئن نوید عالم انتقال کرگئے

ہاکی اولمپیئن نوید عالم انتقال کرگئے