in

کراچی: مون سون بارشیں،ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کی تیاریاں

کراچی: مون سون بارشیں،ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کی تیاریاں

ایڈمنسٹریٹر کراچی لئیق احمد نے کہا ہے کہ مون سون سیزن کے حوالے سے کنٹی جینسی پلان تیار ہے، ڈی واٹرنگ پمپس انڈرپاسز اور دیگر مقامات پر پہنچا دیئے گئے ہیں تاکہ بارشوں کے آئندہ سلسلے کیلئے فوری اقدامات کئے جاسکیں، پیر کی صبح ہونیوالی بارش کا اسپیل قبل از وقت تھا تاہم اس سے ہمیں متحرک ہونے میں مدد ملی ہے۔

ایڈمنسٹریٹر کراچی لئیق احمد نے پیر کو بارش کے بعد شارع فیصل، کارساز، لیاقت آباد اور ناظم آباد انڈر پاسز اور دیگر علاقوں کا دورہ کیا، اس موقع پر میٹروپول چورنگی پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بارشوں سے پیدا ہونیوالی صورتحال سے نمٹنے کیلئے کی جانیوالی تیاریوں کے حوالے سے بتایا۔

اس موقع پر سینئر ڈائریکٹر کوآرڈینیشن خالد خان، ڈائریکٹر جنرل ورکس شبیہہ الحسنین زیدی، سینئر ڈائریکٹر میونسپل سروسز ایس ایم طحہ، ڈائریکٹر نعمان ارشد اور دیگر افسران بھی ایڈمنسٹریٹر کراچی کے ہمراہ موجود تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ برساتی پانی کی نکاسی کیلئے دستیاب مشینری میں 25 ڈی واٹرنگ پمپس کا اضافہ کیا گیا ہے اور افسران و عملے پر مشتمل 3 ٹیمیں تشکیل دیدی گئی ہیں۔

لئیق احمد نے کہا کہ محکمہ موسمیات نے اس سال معمول سے 50 فیصد زیادہ بارشوں کی پیشگوئی کی ہے، جس کے پیش نظر بلدیہ عظمیٰ کراچی سمیت دیگر ادارے ہر قسم کی صورتحال سے نمٹنے کیلئے تیار ہیں، ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے مشترکہ لائحہ عمل اختیار کرنا ہوگا، ہر ادارہ اپنی اپنی جگہ فرائض انجام دے گا تو ہم کسی بھی ہنگامی صورتحال سے باآسانی نمٹ سکیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ شہر کے مختلف علاقوں میں واقع ضلعی بلدیاتی اداروں کے زیر انتظام 514 چھوٹے نالوں اور 38 بڑے نالوں کی صفائی کا کام جاری ہے تاکہ برساتی پانی کی بروقت نکاسی ہوسکے، ہنگامی صورتحال میں ضرورت پڑی تو کنٹونمنٹ بورڈز، پاکستان نیوی اور پی ڈی ایم اے کی مشینری اور عملے کو بھی استعمال کیا جائے گا تاکہ پانی کی نکاسی کا عمل جلد از جلد مکمل کیا جاسکے۔

ایڈمنسٹریٹر کراچی نے کہا کہ شہر کی ارضیاتی ساخت کے تحت 70 سے 80 ملی میٹر بارش کی فوری نکاسی ممکن ہے تاہم 150 سے 200 ملی میٹر بارش کی صورت میں نکاسی آب میں وقت لگ سکتا ہے، شہر کے مختلف مقامات پر جہاں بھی مشینری اور عملہ ڈی واٹرنگ پمپس سمیت تعینات کیا گیا ہے، ان کی موجودگی کی تصدیق کی جائے گی اور موقع پر موجود نہ ہونے کی صورت میں متعلقہ افسران و عملے کیخلاف سخت کارروائی ہوگی۔

ایک سوال کے جواب میں ایڈمنسٹریٹر کراچی لئیق احمد نے کہا کہ شارع فیصل پر موجود تجاوزات کو ختم کیا جائے گا جبکہ لیاری ندی کے اندر لگنے والی بکرا منڈی کو ہٹانا انتظامیہ کی ذمہ داری ہے، شہر میں مختلف مقامات پر جو چھوٹی چھوٹی مویشی منڈیاں لگائی گئی ہیں انہیں انتظامیہ کے ساتھ مل کر ختم کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مقررہ مقامات کے علاوہ شہر میں دیگر مقامات پر منڈی لگاکر جانور فروخت کرنا قطعی غیرقانونی ہے، بلدیہ عظمیٰ کراچی نے شہر میں کسی بھی جگہ ایسی کسی مویشی منڈی کو لگانے کیلئے کسی قسم کی کوئی این او سی جاری کی اور نہ ہی جاری کی جائے گی۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

بھارت: آسمانی بجلی گرنے سے70افراد جان سے گئے

بھارت: آسمانی بجلی گرنے سے70افراد جان سے گئے

باپ، بھائیوں کےمعاف کرنےپرماں کی قاتلہ کی ضمانت منظور

باپ، بھائیوں کےمعاف کرنےپرماں کی قاتلہ کی ضمانت منظور