in

اسددرانی ’را‘ کے ساتھ جڑے ہیں، وزارت دفاع کا الزام

اسددرانی ’را‘ کے ساتھ جڑے ہیں، وزارت دفاع کا الزام

وزارت دفاع نے اسلام آباد ہائیکورٹ کو بتایا ہے کہ آئی ایس آئی کے سابق سربراہ جنرل ریٹائرڈ اسد درانی بھارت کی خفیہ ایجنسی را کے ساتھ جڑے ہیں۔ اس لیے ان کا نام ای سی ایل سے نہ نکالا جائے۔

وزارت دفاع کی درخواست پر وزارت داخلہ نے اسد درانی کا نام 2019 سے ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں ڈال رکھا ہے جس کے باعث وہ بیرون ملک سفر نہیں کرسکتے۔ انہوں نے اپنا نام ای سی ایل سے نکلوانے کیلئے اسلام آباد ہائیکورٹ سے رجوع کیا ہے۔

بدھ کو وزرات دفاع نے معاملے پر تحریری جواب اسلام آباد ہائیکورٹ میں داخل کرا دیا جس میں کہا گیا ہے کہ لیفٹنینٹ جنرل ریٹائرڈ اسد درانی بھارتی خفیہ ایجنسی ’را‘ کے ساتھ 2008 سے جڑے ہیں اور وہ  دوسرے ملک دشمن عناصر کے ساتھ بھی رابطے میں ہیں۔

تحریری جواب کے مطابق اسد درانی نے بھارتی خفیہ ایجنسی کے سابق سربراہ اے ایس دلت کے ساتھ مل کر ’اسپائی کرانیکلز‘ نامی کتاب لکھی۔ کتاب کے معائنے سے پتہ چلتا ہے کہ اس کا مواد آفیشل سیکرٹ ایکٹ 1952 کی خلاف ورزی ہے۔ ان کی دیگر کتابیں بھی ’پاکستان کی اعلیٰ قیادت اور قومی سلامتی‘ کے خلاف ہیں جبکہ اسد درانی کی اکتوبر 2020 کو سوشل میڈیا پر دی گی رائے بھی نامناسب ہے۔

وزارت دفاعی اپنے جواب میں لکھا کہ اسد درانی کا اس کتاب کیلئے باہرجانا، پینل انٹرویو یا بین الاقوامی کانفرنس میں حصہ لینا قومی سلامتی کے خلاف ہے۔ موجود قانون کے مطابق ایسا شخص پاکستان سے باہر نہیں جا سکتا جس پر ملک کے خلاف سازش، مخبری، قومی سلامتی کے خطرے یا دہشت گردی کا الزام ہو۔

وزرات دفاع نے درخواست کی ہے کہ اسد درانی کا نام ای سی ایل سے نہ ہٹایا جائے کیونکہ اسد درانی نے وزارت دفاع کو تحریری بیان میں اس طرح سرگرمیوں سے دور رہنے کا حلف دیا تھا لیکن ابھی تک ان کی طرف سے اس حلف کی پاسداری دکھائی نہیں دیتی۔

اسد درانی آئی ایس آئی کے ساتھ ملٹری انٹیلی جنس کے بھی سربراہ رہے ہیں۔ انہوں نے بھارت کے ساتھ ٹریک ٹو سمیت مذاکراتی عمل میں حصہ لیا۔ ریٹائرمنٹ کے بعد لکھنے پر توجہ دی۔ غیر روایتی انداز اور اپنے موضوع پر گرفت کے باعث انہیں بین الاقوامی کانفرنسز سمیت ٹی وی چینلز کے پروگرامات میں مدعو کیا جاتا ہے۔

گزشتہ ماہ انہوں نے ایک غیر ملکی جریدے میں تفصیلی مضمون لکھتے ہوئے الزام عائد کیا تھا کہ ان کے خلاف وزارت دفاع اور جی ایچ کیو کی کارروائی جنرل باجوہ کی ایما پر ہورہی ہے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

سونے کی قیمت میں پھر کمی

سونے کی قیمت میں پھر کمی

Corona vaccine

کرونا ویکسین کیلئے رجسٹریشن کا طریقہ