in

عورت کی حکمرانی قبول نہیں کروں گا، ناراض لیگی رہنما

عورت کی حکمرانی قبول نہیں کروں گا، ناراض لیگی رہنما

گوجرانوالہ سے مسلم لیگ ن کے ناراض ایم پی اے اشرف انصاری نے کہا ہے کہ وہ ایک مذہبی شخص ہیں۔ اس لیے عورت کی حکمرانی قبول نہیں کریں گے۔

نجی ٹی وی چینل جی این این کے ٹاک شو میں میزبان عارف حمید بھٹی کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ’مسلم لیگ بنیادی طور پر قائداعظم کی جماعت ہے۔ اس لیے پاکستان کا ایک بڑا مذہبی طبقہ مسلم لیگ کو مذہبی جماعت سمجھ کر اس کے ساتھ کھڑا ہے اور میں بھی ان میں شال ہوں۔‘

گوجرانوالہ کی انصاری فیملی کے ارکان مسلم لیگ نواز کے ٹکٹ پر پنجاب اور قومی اسمبلی کے ارکان منتخب ہوتے رہے ہیں مگر اسٹیبلشمنٹ مخالف بیانیہ کے بعد انصاری برادران نے پارٹی پالیسی سے انحراف کیا ہے اور جب گوجرانوالہ میں پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کا پہلا جلسہ ہونے والا تھا تو انصاری برادران نے اس کو روکنے کیلئے کاؤنٹر جلسہ کرنے کی بھی کوشش کی مگر انہیں اجازت نہ ملی۔

جی این این سے بات کرتے ہوئے اشرف انصاری نے کہا کہ ’بہت سارے ارکان قومی و صوبائی اسمبلی کا مذہبی پس منظر ہے۔ وہ کسی صورت میں عورت کی حکمرانی اور مداخلت پسند نہیں کرتے۔ اگر مریم نواز اسی طرح پارٹی کے معاملات اپنے ہاتھ میں لیتی رہیں تو تو بہت سارے ارکان پارٹی کو خیرباد کہہ دیں گے۔

عارف حمید بھٹی نے صنفی امتیاز پر مبنی اس گفتگو پر اشرف انصاری کو ٹوکنے کے بجائے کہا کہ ماشاء اللہ آپ نے بہت اچھی بات کی ہے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

پیپلز پارٹی نے بھی براڈ شیٹ کمیشن مسترد کردیا

پیپلز پارٹی نے بھی براڈ شیٹ کمیشن مسترد کردیا

ایک ملزم 17 مقدمے65 کروڑ کا فراڈ

ایک ملزم 17 مقدمے65 کروڑ کا فراڈ