in

لاہور: طلباء کی ہنگامہ آرائی، 500نامعلوم افراد کیخلاف مقدمہ درج

Student Protest

لاہور ميں گزشتہ روز نجی یونیورسٹی کے باہر طلبا کی جانب سے ہنگامہ آرائی پر 500 نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کر ليا گيا۔

مقدمہ یونیورسٹی آف سینٹرل پنجاب کے چیف سیکیورٹی آفیسر کے بیان پر درج کیا گیا جس میں طلبہ گروپ کے سربراہ زبیر صدیقی سميت درجنوں ساتھی نامزد ہیں۔

يونيورسٹی انتظامیہ کے بیان کے مطابق بعض ملزمان مسلح تھے جبکہ نامزد ملزمان دھرنا دینے سے منع کرنے پر حملہ آور ہوئے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز لاہور کے علاقے جوہر ٹاؤن کے خیابان جناح روڈ پر واقع یونیورسٹی آف سینٹرل پنجاب کے باہر آن لائن امتحانات کے مطالبے کیلئے 300 سے 350 طلباء نے احتجاج کیا۔

احتجاج کے دوران طلباء نے یونیورسٹی میں داخلے کی کوشش کی جس پر گارڈز سے جھگڑا ہوا اور معاملہ ہاتھا پائی تک پہنچ گیا۔ طلباء اور گارڈز دونوں کی جانب سے ایک دوسرے پر شدید پتھراؤ کیا گیا۔

آن لائن امتحانات کامطالبہ:لاہور، فیصل آباد میں تصادم سےمتعدد طلبازخمی

سماء سے خصوصی گفتگو میں وزير تعليم ہائر ايجوکيشن راجہ یاسر کا کہنا تھا کہ جن کو امتحان دینا ہوتا ہے ان کے لیے فیس ٹو فیس یا آن لائن سے فرق نہیں پڑھتا، جو نالائق طلبا ہے وہ ہمیشہ سے بغیر امتحان کے پاس ہونا چاہتے ہیں، جس کی ہرگز اجازت نہیں ہوگی، تاہم یہ فیصلہ متعلقہ یونی ورسٹی کی صوابدید پر ہے۔

انہوں نے کہا کہ بے شک امتحانات آسان کر ديں مگر آن لائن امتحان کا مطالبہ جائز نہیں کیونکہ جنہوں نے پڑھائی کی ہوتی ہے، انہیں اس سے فرق نہیں پڑتا ہے۔ ایسے تو ہر کوئی سڑک پر اٹھ کر اپنے مطالبات منوانے آجائے گا۔

احتجاج میں شامل طلباء کا کہنا تھا کہ پورے سمسٹر ہم نے آن لائن کلاسز لی ہیں جبکہ بعض طلباء ایسے ہیں جو آن لائن کلاسز میں شریک نہیں ہوسکے جس کی وجہ سے انہیں کچھ نہیں آتا۔ آن لائن امتحانات میں اوپن بک کے ذریعے امتحان دیں گے تاکہ جسے جو سوال نہیں آتا اسکا جواب دیکھ کر دے سکے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

اہم خبریں: پارلیمانی پارٹی، ای سی سی کا اجلاس آج

اہم خبریں: پارلیمانی پارٹی، ای سی سی کا اجلاس آج

يورپی پارليمنٹ کا ڈس انفو لیب کے انکشافات کا نوٹس

يورپی پارليمنٹ کا ڈس انفو لیب کے انکشافات کا نوٹس