in

اگلی باری بھی ہماری ہے، عثمان ڈار

اگلی باری بھی ہماری ہے، عثمان ڈار

وزیراعظم کے معاون خصوصی عثمان ڈار کا کہنا ہے کہ اپوزیشن دیکھتے ہہ جائے گی اور اگلی حکومت بھی ہماری ہی آجائے گی۔
سماء کے پروگرام نیوز بیٹ میں گفتگو کرتے ہوئے عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف اگلا الیکشن جیتنے کی بھرپور کوشش کر رہی ہے اور اگلی حکومت بھی اسی کی ہوگی۔
انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی کی حالت یہ ہے کہ ان کو خوشاب کے الیکشن میں 235 ووٹ ملے تھے اس سے زیادہ ووٹ تو محلے کے کونسلر کو ملتے ہیں۔
عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ حکومت کے 3 سال بہت مشکل تھے جس کی وجہ ن لیگ کی جانب سے وراثت میں ملی خراب معاشی صورتحال تھی لیکن اب ہماری محنت کے نتائج سامنے آرہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ کرونا کے وجہ سے دنیا بھر میں کروڑوں لوگ بے روزگار ہوئے مگر ہماری اسمارٹ لاک ڈاؤن پالیسی سے معاشی نقصان کم ہوا ہے۔
عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ اگلے 10 سالوں میں 10 بڑے ڈیمز بنارہے ہیں اور ملکی برآمدات میں اضافہ ہورہا جبکہ جن صنعتوں کو ماضی میں زنگ لگا ہوا تھا وہ بھی ترقی کی جانب گامزن ہے۔
رہنما تحریک انصاف کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن کی حالت یہ ہے کہ یہ لاہور میں بھی 10 ہزار لوگ اکیلے اکٹھے نہیں کرسکتے کیوں کہ عوام ان کو مسترد کرچکی ہے۔
عثمان ڈار نے کہا کہ پیپلزپارٹی اور ن لیگ کے رہنماؤں کو نوازشریف اور آصف زرداری کی کرپشن نظر نہیں آتی ہماری کارکردگی کہاں نظر آئے گی۔
رہنما ن لیگ نہال ہاشمی نے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عوام نے طے کرلیا ہے کہ اگلے الیکشن میں سلیکٹڈ کو ووٹ نہیں دیں گے، یہ لوگ تو پچھلا الیکشن بھی ہار چکے تھے انہیں تو لایا گیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ جب کسی سے کام نہیں ہوتا تو وہ یہی کہتے ہیں کہ ہم اگلی باری میں کام کریں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس وقت مافیا کی حکومت ہے اور ہر سیکٹر میں کرپشن کا بازار گرم ہے۔
نہال ہاشمی کا کہنا تھا کہ ہمارے دور میں جی ڈی پی گرتھ 5 اعشاریہ 8 فیصد تھی اگر یہ حکومت 9 یا 10 فیصد پر لے جاتی تو ہم مان لیتے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ آئی ایم ایف کے آلہ کار ہیں جنہں معیشت برباد کرنے کےلیے لایا گیا ہے۔
پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما ن لیگ عطاء تارڑ کا کہنا تھا کہ اگر ریکارڈ فصل ہوئی ہے تو عوام چینی کے لیے لائینوں میں کیوں لگے ہوئے ہیں، آٹا 80 روپے کلو کیوں ملتا ہے اور ادویات کی قیمتوں میں 500 فیصد اضافہ کیوں ہوا ہے۔
عطاء تارڑ کا کہنا تھا کہ ہم پنجاب کے تمام ضمنی الیکشن جیت چکے ہیں اگر ہم ان کی جگہ ہوتے تو گھر سے بھی نہ نکلتے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ رنگ روڈ اسکینڈل ہو یا ادویات کا معاملہ ہر جگہ کرپشن میں وفاقی وزراء ملوث ہیں۔
بلاول بھٹو کے بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے عطاء تارڑ کا کہنا تھا کہ جس طرح اپوزیشن ہم نے کی ہے پیپلزپارٹی کا کردار اس کے مقابلے میں کچھ بھی نہیں۔
انہوں نے کہا کہ ہماری پوری قیادت جیلیوں میں رہی ہے مگر بلاول بھٹو اور آصف زرداری نے اس حکومت میں ایک گھنٹہ بھی جیل میں نہیں گزارا۔
پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما پیپلزپارٹی فیصل کریم کنڈی کا کہنا تھا کہ ہر حکومت کو یہی لگتا ہے کہ اگلی باری بھی ہماری ہوگی ۔ مشرف کے وقت میں بھی ایسے لوگ تھے جو کہتے تھے مشرف کو 10 دفعہ منتخب کریں گے۔
فیصل کریم کنڈی کا کہنا تھا کہ ہم مانتے ہیں کہ ہم پنجاب میں مظبوط نہیں مگر تحریک انصاف کو بھی بدین الیکشن میں 50 ہزار کے مقابلے میں 6 ہزار ووٹ ملے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ عمران خان ماضی میں کہتے تھے کہ ہمیں ایک موقع دیں ابھی کہہ رہے ہیں ہمیں وقت دے بعد میں کہیں گے کہ مجھے معافی دے۔
فیصل کریم کنڈی کا کہنا تھا کہ یہ ہمارے منصوبوں پر اپنے بورڈز لگارہے ہیں ان کا اپنا صرف ایک بی آرٹی منصوبہ ہے جو ایک ناکام ترین منصوبہ ہے۔
انہوں نے کہا کہ اپوزیشن لیڈر شہبازشریف ہے پارلیمنٹ کے اندر حکومت کو ٹف ٹائم دینے کےلیے ان کا ساتھ دیں گے۔ تاہم ان کا کہنا تھا کہ اگر ن لیگ سنجیدہ ہوتی تو اب تک تحریک عدم اعتماد کامیاب ہوچکا ہوتا۔
فیصل کریم کنڈی کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم اجلاس کے بعد مولانا فضل الرحمان نے کہا تھا کہ پیپلزپارٹی سے متعلق اجلاس میں غور نہیں ہوا مگر ابھی کہہ رہے ہیں کہ پیپلزپارٹی کےلیے دروازے کھلے ہیں۔ انہوں نے کہا کے پی ڈی ایم رہنما جب تک نوٹس واپس نہیں لیتے تب تک پیپلزپارٹی کو بھول جائے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

سندھ میں صحافیوں کی حفاظت کابل:خواتین کی کم نمائندگی پرتشویش

سندھ میں صحافیوں کی حفاظت کابل:خواتین کی کم نمائندگی پرتشویش

کیا فواد خان اور فرحان اختر ایک ساتھ نظر آئینگے؟

کیا فواد خان اور فرحان اختر ایک ساتھ نظر آئینگے؟