in

معیشت ٹھیک ہے تو معاشی ٹیموں کی متواتر تبدیلی کیوں؟

معیشت ٹھیک ہے تو معاشی ٹیموں کی متواتر تبدیلی کیوں؟

مسلم لیگ ن کے رہنما محمد زبیر عمر کا کہنا ہے کہ حکومت معیشت کی بہتری کا دعویٰ کررہی ہے لیکن اگر اس کی کارکردگی اچھی ہے تو پھر معاشی ٹیم کیوں بار بار تبدیل کی جارہی ہے جو کہ نا اہلی کی جانب اشارہ دیتی ہے۔
سماء کے پروگرام ندیم ملک لائیو میں گفتگو کرتے ہوئے زبیر عمر کا کہنا تھا کہ حکومت کا معاشی منصوبہ تو اسد عمر نے بنایا تھا لیکن انہیں بھی وزیراعظم نے 8 مہینے میں ہٹادیا تھا۔
زبیرعمر نے کہا کہ اسدعمر کے بعد حفیظ شیخ کو بھی تبدیل کردیا گیا 5 فنانس سیکرٹری تبدیلی کیے گئے، 4 ایف بی آر چیئرمین بدلے گئے لیکن حالات بہتری کی طرف نہیں جارہے۔
رہنما ن لیگ کا کہنا تھا کہ ٹیم بدلنے سے کوئی فائدہ نہیں تحریک انصاف کو کپتان بدلنے کی ضررت ہےکیوں کہ ٹیم بدلنے کے باوجود اگر کچھ بہتر نہیں ہورہا تو اس کا مطلب لیڈر صحیح نہیں ہے۔
مفتاح اسماعیل کے بیان سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ ہم ذاتی کاروبار کی نہیں عوام کی بات کررہے ہیں جو مہنگائی اور بے روزگاری کی چکی میں پس رہے ہیں۔
زبیر عمر کا کہنا تھا کہ اسٹاک ایکس چینج میں 3 سال میں صرف 11 فیصد گروتھ ہوئی ہے جبکہ ہمارے دور میں 100 فیصد گروتھ ہوئی تھی انہوں نے کہا کہ ہم نے ٹیکس کلیکشن دوگنی کردی تھی جبکہ موجودہ حکوم کے دور میں صرف 17 فیصد اضافہ ہوا ہے۔
انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ میں بیانیہ نوازشریف کا ہی چلتا ہے اور میرا نہیں خیال کہ شہبازشریف کو کسی بات کے لیے نوازشریف کے پاؤں پڑنے کی ضرورت ہے۔
زبیر عمر کا کہنا تھا کہ اگر ہمارے ساتھ ناانصافی ہوتی ہے تو ہم اس پر ضرور آواز اٹھائیں گے مگر لوگ اس کو مزاحمت کا نام دیتے ہے۔
پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما تحریک انصاف عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ اس رپورٹر کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں جس نے مفتاح اسماعیل سے پوچھا کہ اگر معیشت بری ہے تو آپ کا کاروبار زیادہ منافع کیسے کما رہا ہے۔
عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ زبیر عمر کہہ رہے ہیں کہ اسد عمر کو وزارت خزانہ سے کیوں ہٹایا گیا تو اس کا مطلب یہ ہوا کہ ان کی نظر میں وہ صحیح کام کررہے تھے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر عمران خان مجھے بھی وزارت سے ہٹا دیتے ہیں تو مجھے کوئی گلہ نہیں ہوگا کیونکہ یہ وزیراعظم کی صوابدید ہے۔
انہوں نے کہا کہ معاشی صورتحال بہتری کی جانب گامزن ہے مگر مسلم لیگ ن کو ہر حال میں عمران خان کو غٖلط ثابت کرنا ہے۔
عثمان ڈار کا کہنا ہے کہ ن لیگ والوں کو فکر اس بات کی ہے کہ ڈھائی سال سے تو ہم معیشت پر سیاست کررہے تھے وہ بھی بہتر ہورہی ہے تو اب عوام کے سامنے کیا کہیں گے۔
ان کا کہنا تھا کہ اسٹاک ایکس چینج 48 ہزار پر پہنچ گئی ہے جبکہ ٹیکسٹائل انڈسٹری جو ن لیگ کے دور میں برباد ہوئی تھی وہ بھی ترقی کررہی ہے۔
عثمان ڈار نے کہا کہ پچھلی حکومت نے ہمیں 19 ارب ڈالر کا خسارہ دیا تھا جبکہ اس وقت زراعت اور صنعتیں دونوں ترقی کررہی ہیں۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

فیصل آباد: نیند خراب کرنے پر باپ نے بیٹی کو قتل کردیا

فیصل آباد: نیند خراب کرنے پر باپ نے بیٹی کو قتل کردیا

بینکوں کے ریئل اسٹیٹ میں سرمایہ کاری پرپابندی میں نرمی

بینکوں کے ریئل اسٹیٹ میں سرمایہ کاری پرپابندی میں نرمی