in

نیب کے کچھ قوانین سرمایہ کاری میں رکاوٹ ہیں،اسدعمر

نیب کے کچھ قوانین سرمایہ کاری میں رکاوٹ ہیں،اسدعمر

وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کا کہنا ہے کہ نیب کے کچھ قوانین اور انہیں نافذ کرنے کا طریقہ سرمایہ کاری کی راہ میں بڑی رکاوٹیں ہیں۔
سماء کے پروگرام آواز میں گفتگو کرتے ہوئے اسدعمر کا کہنا تھا کہ نیب کے کچھ قوانین میں ابہام ہے جس سے نجی شعبے اور بیورو کریسی میں خوف پایا جارہا ہے جس میں ترمیم کی ضرورت ہے۔
انہوں نے کہا کہ یہ قوانین ہم نے نہیں بنائے بلکہ پہلے سے موجود ہیں گو ہم نے ان قوانین میں ترمیم کی کوشش کی تھی لیکن اپوزیشن جماعتوں نے ہمارا ساتھ نہیں دیا تھا۔
اسد عمر کا کہنا تھا کہ ہم نیب قوانین میں تبدیلی کا بل اسمبلی کے اندر لے گئے تھے مگر اپوزیشن کا کہنا تھا کہ جب تک ہمارے کرپشن کیسز حتم نہیں کیے جاتے ہم قوانین میں کسی قسم کے بہتری نہیں ہونے دیں گے۔
اسدعمر کا کہنا تھا ک اس وقت سینیٹ میں ہمارے پاس نمبر کم تھے اب دوبارہ اپوزیشن سے رابطہ کیا جائے گا لیکن اگر وہ نہیں مانے تو ہم پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں اس بل کو پاس کرسکتے ہے۔
اسدعمر کا کہنا تھا کہ مہنگائی کی بڑی وجہ عالمی سطح پر کھانے پینے کی چیزوں کی قیمتوں میں اضافہ ہے لیکن باقی اشیاء کی قیمتیں مستحکم ہیں۔
جی ڈی پی گروتھ بڑھنے کی وجوہات بتاتے ہوئے اسدعمر کا کہنا تھا کہ ترسیلات زر، گیس، کوئلہ اور صنعتوں کے علاوہ فصلوں کی پیداور میں بھی اس سال ریکارڈ اضافہ ہوا ہے۔
اسدعمر کا کہنا تھا کہ اس سال کپاس کی فصل اچھی نہیں ہوئی مگر اگلے سال کے لیے 50 فیصد اضافے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ برآمدات اور بیرونی سرمایہ کاری میں بھی اضافہ نظر آرہا ہے۔
بجٹ کے حوالے سے وزیرمنصوبہ بندی اسدعمر کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کی واضح ہدایت ہے کہ ایسا کوئی فیصلہ نہیں کیا جائے گا جس سے غریب آدمی کی زندگی پر کوئی منفی اثر پڑے۔
انہوں نے کہا کہ بجلی کی قیمتوں میں اکتوبر کے مہینے میں 8 پیسے کا معمولی اضافہ ہوا تھا جو نہ ہونے کے برابر ہے تاہم بجٹ میں بجلی کی قیمتوں میں کوئی اضافہ نہیں کیا جائے گا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

کرکٹ کے عالمی مقابلوں میں ٹیموں کی تعداد بڑھادی گئی

کرکٹ کے عالمی مقابلوں میں ٹیموں کی تعداد بڑھادی گئی

News-Outlook_urdu-version

اہم خبر: امتحانات، اسکولز کھولنے سے متعلق اجلاس آج ہوگا