in

تیس سال اورزائدعمرکےافراد کیلئےواک اِن ویکسینیشن کی سہولت

تیس سال اورزائدعمرکےافراد کیلئےواک اِن ویکسینیشن کی سہولت

این سی او سی کے سربراہ اسد عمر نے بتایا ہے کہ 30 سال سے زائد عمر کے افراد کو واک ان ویکسینیشن کی سہولت دینے کا فیصلہ ہوا ہے۔

جمعہ کو اسد عمر نے ٹویٹ کرتے ہوئے بتایا ہے کہ 30سال اور زائد عمر کے افراد کیلئے ہفتہ 29 مئی سے واک ان ویکسینیشن کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ یہ فیصلہ جمعہ کو ہونے والے این سی او سی کے اجلاس میں کیا گیا ہے۔اسد عمر نے بتایا کہ اگر آپ 30سال سے زائد عمر کے ہیں اور1166 پر شناختی کارڈ نمبر بھیج کر رجسٹریشن کروائی ہے تو کل سے کسی بھی ویکسینیشن سینٹر سے ویکسین لگوا سکتے ہیں۔

اس سے قبل 40 سال اور زائد عمر کے افراد کے لیے واک ان ویکسینیشن کی سہولت تھی۔ اس کے علاوہ اسد عمر نے مزید بتایا کہ پاکستان میں جمعرات 27 مئی تک 50 لاکھ سے زائد افراد کو ویکسین لگائی جا چکی ہے۔ انھوں نے شہریوں سے اپیل کی کہ جلد رجسٹر کریں اور ویکسین لگوائیں تاکہ کرونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کی بندشیں مزید کم کرسکیں۔

بدھ کو این سی او سی کے سربراہ اسد عمر نے ٹویٹ کرتے ہوئے بتایا تھا کہ  19 سال اور زائد عمر والوں کی رجسٹریشن کا عمل جمعرات 27 مئی سے شروع ہوگا۔اس اقدام سے ملک بھر میں طبی ماہرین کی جانب سے ویکسینیشن کے لیے مقررہ آبادی کی رجسٹریشن ممکن ہوجائے گی۔

منگل کو این سی او سی کے سربراہ اسد عمر نے ویکسینیشن کے عمل سے متعلق اہم وضاحت کی ہے۔ انھوں نے ٹویٹ کرتے ہوئے بتایا کہ عمر کے لحاظ سے ویکسینیشن کا عمل دنیا میں محدود ویکسین دستیابی کے باعث شروع کیا۔ ویکسین کی سپلائی اور ویکسینیشن میں ٹھوس کاوشوں سے اضافہ ہو رہا ہے۔40 سال سے کم عمر کے افراد میں شرح اموات 1 فیصد سے بھی کم رہی جبکہ 41 سے 50 سال کی عمر کے افراد میں شرحِ اموات 1.8 فیصد رہی۔51 سے 60 میں 3.8فیصد، 61 سے 70 میں 7.2 فیصد شرح اموات رہی۔ انھوں نے بتایا  کہ 71 سے 80 سال میں 11.1 فیصد اور 80 سے زائد عمر کے افراد میں شرح اموات 15 فیصد رہی۔

اسد عمر کا مزید کہنا تھا کہ ویکسین پہلے ان طبقات کو لگائی گئی جنہیں متاثر ہونے کا زیادہ خطرہ تھا۔کرونا کے باعث اموات کی شرح عمر کے ساتھ بڑھتی ہے۔7 فیصد پاکستانی 60 سال کے عمر سے زائد ہے۔53 فیصد کرونا سے اموات 60 سال سے زائد عمر کے افراد کی ہوئیں۔77 فیصد پاکستانی 40 سال کی عمر سے کم ہیں۔9 فیصد اموات 40 سال سے کم عمر کے افراد کی ہوئیں۔

منگل کو سماء کے پروگرام سات سے آٹھ میں گفتگو کرتے ہوئے پارلیمانی سیکرٹری صحت ڈاکٹرنوشین حامد کا کہنا تھا کہ پاکستان میں چین کے اشتراک سے بننے والی کرونا ویکسین  کی ایک دو روز میں ڈریپ سے منظوری لی جائے گی،جس کے بعد ویکسین اگلے ہفتے لانچ کردی جائے گی۔ انھوں نے بتایا کہ مذکورہ ویکسین کی کوالٹی ٹیسٹنگ کا عمل مکمل ہوچکا ہے اوراس کو تمام مروجہ طریقہ کار سے گزارا جاچکا ہے۔

ڈاکٹرنوشین حامد نے بتایا کہ لانچنگ کے موقع پر ہی کچھ لوگوں کو وہ ویکسین لگائی جائے گی۔ یہ ویکسین بہت فائدہ مند ہے اور کرونا ہونے کی صورت میں بھی مریض کو زیادہ نقصان نہیں پہنچے گا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

اولیول امتحان کی تاریخ کااعلان کردیا گیا

اولیول امتحان کی تاریخ کااعلان کردیا گیا

جیاعلی نے ہانگ کانگ کے پی ٹی آئی ممبرسےشادی کرلی

جیاعلی نے ہانگ کانگ کے پی ٹی آئی ممبرسےشادی کرلی