in

شادی کیلئے عمر کا قانونی تعین کرنا خلاف شریعت ہے ،مفتی زبیر

شادی کیلئے عمر کا قانونی تعین کرنا خلاف شریعت ہے ،مفتی زبیر

مفتی زبیر کا کہنا ہے کہ بلاضرورت شادی میں تاخیر کرنا غلط ہے مگر عمر کا معیاد مقرر کرنا شریعت کے خلاف ہے۔
سماء کے پروگرام سات سے آٹھ میں گفتگو کرتے ہوئے مفتی زبیر نے سندھ اسمبلی سیکرٹریٹ میں شادی سے متعلق جمع کیے گئے بل پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ بل میں 18 سال لکھا گیا ہے مگر بلوغت کی آخری عمر 15 سال ہے۔
مفتی زبیر کا کہنا تھا کہ اس بل کو لانے کے پیچھے محرکات بلکل درست ہے اور اس کا مقصد نکاح کو عام کرنا اور معاشرے سے بے راہ روی کو حتم کرنا ہے۔
انہوں نے کہا کہ موجودہ دور میں بیٹی کی شادی کو والدین کے لیے بوجھ بنادیا گیا ہے جو کہ غلط ہے تاہم ان کا کہنا تھا کہ والدین کو بچوں کی 18 سال میں شادی کے لیے پابند کرنے سے متعلق شریعت میں کوئی حکم نہیں۔
پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما جماعت اسلامی عبدالرشید کا کہنا تھا کہ مجھے اس سے کوئی سروکار نہیں کہ سندھ اسمبلی کے اراکین کو یہ پسند آتا ہے یا نہیں بلکہ مجھے وہ پسند ہے جو اللہ کو پسند ہے۔
انہوں نے کہا کہ میرا بل شریعت کے عین مطابق ہے اور معاشرے کی برائیاں کنٹرول کرنے کا یہ واحد ذریعہ ہے کہ نکاح کو سنت کے طریقے سے کیا جائے۔
انہوں نے کہا کہ اگر وفاقی حکومت 18 سال سے پہلے شادی پر پابندی لگا سکتی ہے تو سندھ اسمبلی 18 سال کے عمر میں شادی لازم کرنے کا بل کیوں پاس نہیں کرسکتی۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

وفاق نے ڈیفنس۔کلفٹن کراچی کیلئے 60ملین کی خصوصی گرانٹ جاری کردی

وفاق نے ڈیفنس۔کلفٹن کراچی کیلئے 60ملین کی خصوصی گرانٹ جاری کردی

لاہور:قسط کے800روپے کاجھگڑا خاتون کی جان لے گیا

لاہور:قسط کے800روپے کاجھگڑا خاتون کی جان لے گیا