in

مسلم لیگ ن بیرونی ایجنڈے پر عمل پیرا ہے،عثمان ڈار

مسلم لیگ ن بیرونی ایجنڈے پر عمل پیرا ہے،عثمان ڈار

وزراعظم کے معاون خصوصی عثمان ڈار کا کہنا ہے کہ مسلم لیگ ن کو پاکستان کی معیشت میں بہتری نظر نہیں آئے گی کیوں کہ یہ بیرونی ایجنڈے پر عمل پیرا ہے اور اس کا مقصد صرف ملک کو تباہ حال دکھانا ہے۔

سماء کے پروگرام ندیم ملک لائیو میں گفتگو کرتے ہوئے عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ کو اس بات کا ڈر ہے کہ معیشت اچھی ہورہی ہے اور اگر معیشت اسی طرح چلتی رہی تو یہ سن 2023 کا الیکشن بری طرح ہار جائے گی۔
اپنی بات کی وضاحت کرتے ہوئے عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ قائد ن لیگ نوازشریف باہر سے بیٹھ کر ان کے لیے ایجنڈا بھیجتے ہیں لہٰذا اس حساب سے وہ فارن ایجنڈا ہی ہوا۔
عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ ملک کے حالات بہتر ہورہے ہیں تاہم مہنگائی ضرور ہے لیکن یہ صرف پاکستان کا نہیں دنیا بھر کا مسئلہ ہے جو کرونا کی وجہ سے درپیش ہے۔
عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ سندھ کو وزیراعظم کے دورہ سندھ میں کبھی کوئی دلچسپی نہیں رہی اور مرادعلی شاہ کے نزدیک صرف سندھ ہی پورا پاکستان ہے۔
پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما ن لیگ مصدق ملک کا کہنا تھا کہ کسی غریب سے پوچھا جائے اگر وہ کہے کہ ان کا اچھا گزارہ ہورہا ہے تو پھر معیشت اچھی ہوگی ورنہ عام آدمی کو معیشت کے اعداد و شمار سے کوئی غرض نہیں ہے۔
مصدق ملک کا کہنا تھا کہ سڑکوں پر عام آدمی سے پوچھا جائے کہ معیشت کا کیا حال ہے تو وہ آپ کو معیشت کا اصل حال بتادے گا۔
ان کا کہنا تھا کہ سرکاری افسران تک کہہ رہے ہیں کہ ہم خودکشیوں پر مجبور ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ معیشت اچھی تب ہوگی جب عام آدمی پر اس کا اچھا اثر ہوگا۔
رہنما ن لیگ کا کہنا تھا کہ ہم عرصے سے یہی سن رہے ہیں کہ ہم فارن ایجنڈے پر عمل پیرا ہیں، ہمیں غدار کہا گیا اور ہمارے رہنماؤں کو گولیاں ماری گئی۔
انہوں نے کہا کہ اگر گندم کی ریکارڈ پیداور ہوئی ہے تو قیمت بھی کم ہونی چاہیے مگر یہ حکومت اتنی نااہل ہے کہ اتنی پیداور کے باوجود قیمتیں کم نہ ہوسکیں اور عوام کو آج بھی ریلیف نہیں مل رہا۔
مصدق ملک کا کہنا تھا کہ جو شخص بھی حکومت پر تنقید کرے تو یہ اس پر معترض ہوجاتے ہیں اور کبھی پولیس اس کے پیچھے لگادی جاتی ہے تو کبھی نیب اور ایف آئی اے کے کیسز بنا دیے جاتے ہیں۔
پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما پیپلزپارٹی مولا بخش چانڈیو کا کہنا تھا کہ شیخ رشید جس طرح بیانات دے رہے ہیں وہ اس حکومت کا خاصا ہے جس میں کوئی بھی شائستگی سے بات کرنے کے قائل نہیں۔
انہوں نے کہا وزیرداخلہ کراچی پہنچ گئے مگر وزیراعلیٰ سندھ کی علم میں نہیں ہے ہمیں بتایا جائے کہ ان کو تنگ کون کررہا ہے۔
مولا بخش چانڈیو کا کہنا تھا کہ عمران خان پہلے دن سے دو باتیں کررہے ہیں ایک یہ کہ یہ خرابیاں ماضی میں ہوئیں اور دوسری بات کسی کو نہیں چھوڑوں گا۔
انہوں نے کہا کہ ہمارے حکمران ذہنی مریض ہوگئے ہیں یہ سمجھتے ہیں کہ جو ہم سوچتے ہیں حقیقت میں بھی ویسے ہی حالات ہوں گے مگر حقیقت اس کے برعکس ہے۔
مولا بخش چانڈیو نے کہا کہ سندھ میں جاری پروجیکٹ سے لوگوں کو نکال کر بیروزگار کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں سیاسی استحکام کی ضرورت ہے جو سیاسی انتشار اس دور میں ہے پہلے کبھی نہیں رہا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

شوکاز میں نے پھاڑا، نواز یا مریم کو جوابدہ نہیں،بلاول

شوکاز میں نے پھاڑا، نواز یا مریم کو جوابدہ نہیں،بلاول

کراچی کی حالت نیشنل سیکیورٹی کا مسئلہ ہے، مصطفیٰ کمال

کراچی کی حالت نیشنل سیکیورٹی کا مسئلہ ہے، مصطفیٰ کمال