in

نوازشريف کی پیپلزپارٹی سے متعلق شاہدخاقان کے مؤقف کی تائید

Naeem Ashraf Butt Art Final

اپوزيشن اتحاد کے حوالے سے نواز شريف کی زيرصدارت نون ليگ کا طويل مشاورتی اجلاس ہوا ، جس میں فيصلہ کيا گيا کہ پارليمنٹ کی حد تک شہباز شريف پيپلز پارٹی سميت تمام جماعتوں کو ساتھ ليکر چليں جبکہ پی ڈی ایم ميں پارٹی کا مؤقف وہی ہے جو شاہد خاقان عباسی بيان کرچکے ہيں۔

مسلم لیگ ن کا اسلام آباد ميں 5 گھنٹے طويل اجلاس ہوا، سابق وزیراعظم نواز شریف نے ویڈیو لنک سے اجلاس کی صدارت کی۔

ذرائع کے مطابق اجلاس ميں فيصلہ کيا گيا ہے کہ قومی اسمبلی ميں بطور اپوزيشن ليڈر شہباز شريف پيپلز پارٹی اور اے اين پی سميت تمام اپوزيشن کی جماعتوں کے ساتھ مشاورت کے ساتھ مشترکہ حکمت عملی اپنائيں گے، حکومت کو بجٹ سميت ہر معاملے پر ٹف ٹائم ديا جائے گا۔

پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ میں پاکستان پيپلز پارٹی اور عوامی نیشنل پارٹی کی واپسی پر نوازشريف سميت اکثريت نے شاہد خاقان عباسی کے مؤقف کی تائيد کردی، مسلم لیگ ن نے اپوزيشن اتحاد کے سربراہی اجلاس ميں اسي رائے کو قائم رکھنے کا فيصلہ کیا۔

گزشتہ روز میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے سینئر رہنماء شاہد خاقان عباسی نے کہا تھا کہ اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد پی ڈی ایم میں پاکستان پیپلزپارٹی کی اب واپسی کے دروازے بند ہیں، پی ڈی ایم میں پیپلزپارٹی کو کوئی دعوت نہیں دی گئی، جو اعتماد انہوں نے توڑا ہے اس کا جواب دینا ہوگا۔

ذرائع کے مطابق پی ڈی ایم کی ديگر 7 جماعتوں کے مؤقف کے بعد مسلم لیگ ن حتمی لائحہ عمل بنائے گی۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

وزیرداخلہ شیخ رشید وزیراعظم کی ہدایت پر کراچی پہنچ گئے

وزیرداخلہ شیخ رشید وزیراعظم کی ہدایت پر کراچی پہنچ گئے

پاکستان میں سونا سستا ہوگیا

سونے کی قیمت میں غیر معمولی اضافہ