in

پیپلزپارٹی نے این اے249 میں منظم دھاندلی کی، عطاء تارڑ

پیپلزپارٹی نے این اے249 میں منظم دھاندلی کی، عطاء تارڑ

مسلم لیگ ن کے رہنماء عطاء تارڑ نے الزام عائد کیا ہے کہ این اے 249 کراچی کے ضمنی الیکشن میں وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے قیادت کے کہنے پر منظم دھاندلی کی ہے کیونکہ یہ الیکشن پیپلز پارٹی کیلئے زندگی موت کا مسئلہ بن چکا تھا۔

سماء کے پروگرام سوال میں گفتگو کرتے ہوئے رہنماء مسلم لیگ ن عطاء تارڑ کا کہنا تھا کہ پریزائڈنگ افسران وزارت تعلیم سندھ کے ملازم تھے جن کے ذریعے سندھ حکومت نے ایک منظم دھاندلی کروائی۔

عطاء تارڑ کا کہنا تھا کہ ایک ایسے الیکشن میں جس میں ٹرن آؤٹ صرف 20 فیصد ہو وہاں پر صبح 5 بجے تک نتائج کا آنا 100 فیصد دھاندلی کی جانب اشارہ کرتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن نے دھاندلی روکنے میں اپنا وہ کرادار ادا نہیں کیا جو اسے کرنا چاہیے تھا۔

رہنماء ن لیگ کا کہنا تھا کہ یہ سیٹ پیپلزپارٹی کے لیے زندگی موت کا مسئلہ بن گیا تھا کیوں کہ اگر وہ ہارتی تو اگلی مرتبہ صوبائی حکومت بھی ان کے ہاتھ سے نکل جانے کا خطرہ تھا۔

عطاء تارڑ نے کہا کہ کراچی کے عوام نے سن 2018 میں تحریک انصاف کو بھی ووٹ دیا تھا لیکن انہوں نے وہ وعدے پورے نہیں کیے جس کے وجہ سے عوام نے انہیں بھی مسترد کردیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ نوازشریف جب وزیراعظم بنے تو پہلا اجلاس کراچی میں بلایا اور سب کو بٹھا کر کراچی کا امن واپس لانے میں کردار ادا کیا۔

بلاول بھٹو کے بشیرمیمن سے متعلق بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے عطا تارڑ کا کہنا تھا کہ بشیرمیمن ،طارق کھوسہ اور ناصر درانی جیسے افسران کی کریڈیبلٹی پر شک نہیں کیا جاسکتا۔

عطاتارڑ کا کہنا تھا کہ بشیرمیمن ایک ایماندار شخص ہیں جو بلاول بھٹو کے والد صاحب کے کام کے نہیں تھے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

خیبرپختونخوا میں 8 سے 16 مئی تک لاک ڈاؤن کافیصلہ

خیبرپختونخوا میں 8 سے 16 مئی تک لاک ڈاؤن کافیصلہ

اداکارہ مرینہ خان بھی کرونا وائرس کا شکار

اداکارہ مرینہ خان بھی کرونا وائرس کا شکار