in

پاکستان نے کسی کو کروناوائرس سے ’’علاج‘‘ کالائسنس نہیں دیا

پاکستان نے کسی کو کروناوائرس سے ’’علاج‘‘ کالائسنس نہیں دیا

ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی آف پاکستان (ڈریپ) نے ایک ایڈوائزری جاری کی ہے، جس میں لوگوں کو ایک ایسی دوا کے بارے میں متنبہ کیا گیا ہے جو کرونا وائرس کا ’’مکمل علاج‘‘ اور لائسنس یافتہ ہے۔

ریگولیٹری اتھارٹی نے اپنے ایک بیان میں سوشل میڈیا پر چلنے والی خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایسے تمام دعوے بے بنیاد اور جھوٹ ہیں۔

ڈریپ کا فیس بک پر نوٹس میں کہنا ہے کہ کرونا وائرس کے دنوں میں اس بات کا قوی امکان ہے کہ کوئی شخص اپنی ہیلتھ پراڈکٹس (خصوصاً وٹامنز، منزلز وغیرہ) کے کرونا وائرس کے علاج میں کار آمد ہونے کا دعویٰ کرے، اتھارٹی آپ کے علم میں لانا چاہتی ہے کہ ایسی پراڈکٹس کو عمومی صحت کیلئے کار آمد سمجھا جاتا ہے اور کرونا وائرس کے علاج کیلئے ویکسین کے علاوہ کسی کو اجازت نہی دی گئی۔

ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کا کہنا ہے کہ کسی بھی غلط دعوے دار کی بات کا یقین نہ کریں اور شکایت کی صورت میں ڈریپ سے رابطہ کریں۔

اسلام آباد آفس: 9107416-51-0092، 03727-0800

کراچی: 13/34390712-021

پشاور: 12484/9211749-091

لاہور: 99203335-042

کوئٹہ: 2443926-081



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

مردان میں خاتون کا گینگ ریپ، دو ملزمان گرفتار

مردان میں خاتون کا گینگ ریپ، دو ملزمان گرفتار

لیری کنگ 87 برس کی عمر میں انتقال کر گئے