in

چینی بحران ختم کرنے کیلئے قیمت کاتعین ضروری ہے، شہزاداکبر

Shahzad Akber Pc Lhr 01-04

وزیراعظم کے معاون خصوصی احتساب شہزاد اکبر کا کہنا ہے کہ چینی کے بحران کو ختم کرنے کے لیے قیمت کا تعین ضروری ہے کیونکہ پچھلی 4، 5 دہائیوں سے چینی کی قیمت کا تعین نہیں کیا گیا۔

لاہور میں معاون خصوصی اطلاعات پنجاب فردوس عاشق اعوان کے ہمراہ پریس کانفرس کرتے ہوئے شہزاد اکبر نے کہا کہ ایوب خان کے دور سے چینی کا مسئلہ چل رہا ہے اور چینی کی قیمت کے تعین کا قانون 1958 سے بنا ہوا ہے۔

معاون خصوصی احتساب نے کہا کہ چینی کی ذخیرہ اندوزی ختم کرنے کے لیے اقدامت اٹھائے ہیں اور پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ایکس مل پرائس مقرر کی گئی ہے۔ ایکس مل پرائس مقرر ہونے سے ایف آئی اے اور ایف بی آر کوئی تنگ نہیں کرے گا۔

انہوں نے بتایا کہ کچھ شوگر ملرز نے چینی کی قیمتوں پر عدالت سے رجوع کیا ہے۔ ہم نے حکومت کے ڈیٹا کے بجائے شوگر ملز کے ڈیٹا پر قیمت مقرر کی اور حکومتی ڈیٹا پر چینی کی قیمت مقرر کی جاتی تو مزید 5 سے 6 روپے کم ہوتی۔ چینی سٹہ مافیا کے خلاف 10ایف آئی آرز درج ہوچکی ہیں۔

شہزاد اکبر نے کہا کہ حکومت کرپٹ عناصر کے خلاف سرگرم ہے اور اشيائے خورونوش کی ذخيرہ اندوزی روکنے کے لیے اقدامات کر رہے ہيں۔ رمضان المبارک میں چیزیں سستی ہونے کے بجائے مہنگی ہوجاتی ہیں۔

معاون خصوصی احتساب نے مزید کہا کہ سب سے مشکل کام اپنے گھر کے لوگوں سے سوال کرنا ہوتا ہے۔ نعرہ احتساب اور قانون کی عمل داری کا ہے تو اپنوں کا احتساب بھی کرنا ہوگا جبکہ کسی کو ٹارگٹ نہیں کیا جا رہا ہے بلکہ بلا تفریق احتساب کیا جا رہا ہے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

russia-and-pakistan

روس پاکستان کو مزید ڈیڑھ لاکھ اسپوٹنک ویکسین فراہم کریگا

بلدیاتی ادارے بحال نہ ہونے پرسابق میئر لاہورنےہائیکورٹ سےرجوع کرلیا

بلدیاتی ادارے بحال نہ ہونے پرسابق میئر لاہورنےہائیکورٹ سےرجوع کرلیا