in

اوبر ڈرائیور کے منہ پر کھانسی والی خاتون کو رہا کردیا گیا

اوبر ڈرائیور کے منہ پر کھانسی والی خاتون کو رہا کردیا گیا

غیر ملکی خبر رساں ادارے ڈیلی میل کے مطابق امریکا کے شہر سان فرانسسکو میں اوبر کار سروس کے ڈرائیور کے ساتھ بدتمیزی کرنے والی خاتون کو ضمانت پر رہا کردیا گیا ہے۔ واقعہ گزشتہ ہفتے پیش آیا تھا، جس کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی۔

ضمانت پر رہا کی گئی 24 سالہ خاتون کی شناخت ارنا کیمیائے کے نام سے ہوئی تھی، جس پر چوری، دھاوے، مار پیٹ، سازش اور صحت و سلامتی سے متعلق قانون کی خلاف ورزی کے الزامات عائد کیے گئے تھے۔

اوبر کمپنی کے مطابق متعلقہ ڈرائیور کا تعلق نیپال سے ہے، جو 8 سال قبل اپنے پیسے کمانے کیلئے نیپال سے امریکا آیا تھا۔ ڈرائیور نے رائیڈ بک کرنے والی خاتون کو سفر سے قبل منہ پر ماسک پہننے کی تلقین کی تھی۔ خاتون ٹیکسی میں سوار ہوتے وقت منہ پر ماسکی نہیں پہنی ہوئی تھی۔

نیپالی ڈرائیور سوبھاکار نے سفر شروع کرنے سے قبل جب خاتون کو ماسک پہننے کا کہنا تو خاتون ڈرائیور سے الجھ پڑی اور اسے برا بھلا کہنا شروع کر دیا۔ خاتون نے ڈرائیور سے کہا کہ وہ خوش قسمت ہے کہ اس بات پر ڈرائیور کی پٹائی نہیں کی۔ خاتون ٹیکسی میں اپنی دو دوستوں کے ہمراہ سوار ہوئی تھیں۔

برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ استغاثہ کے نمائندوں نے انہیں بتایا کہ خاتون ارنا کے خلاف چوری اور سازش کرنے کے الزامات فریز کردیئے گئے ہیں۔ مقامی میڈیا نے بتایا کہ ارنا کو ضمانت پر رہا کر دیا گیا ہے۔ اب وہ اپنے خلاف آئندہ عدالتی کارروائی کی تاریخ کی منتظر ہے۔

واضح رہے کہ کچھ روز قبل سوشل میڈیا پر وائر ہونے والی ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ جب ڈرائیور نے خاتون سے چہرے پر ماسک لگانے کیلئے کہا تو اس نے جان بوجھ کر ڈرائیور کے چہرے کی طرف کھانسنا شروع کر دیا۔ خاتون کی دونوں سہیلیاں بھی ڈرائیور پر چلّائیں۔ بعد ازاں مذکورہ خاتون نے ڈرائیور کا موبائل فون چھین لیا اور اس کے چہرے سے ماسک نوچنے کی بھی کوشش کی۔

نیپال ڈرائیور کا کہنا ہے تھا کہ اگر میں رنگت گوری ہوتی تو مجھے ان خواتین کی طرف سے اس طرح کے برتاؤ کا سامنا نہیں کرنا پڑتا۔ یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ امریکی ریاست جورجیا کے شہر اٹلانٹا میں چند روز قبل جنونی شخص نے فائرنگ کرکے 8 ایشیائی خواتین کو قتل کردیا تھا۔ مقتولین کا تعلق جنوبی کوریا سے تھا، جو مختلف مساج پارلرز میں کام کرتی تھیں۔ جنوبی کوریا کی حکومت کی جانب سے ہلاکتوں کی تصدیق کی گئی تھی۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

اہم خبر: سندھ ميں کتوں کے کاٹنے کے واقعات ميں خوفناک اضافہ

اہم خبر: سندھ ميں کتوں کے کاٹنے کے واقعات ميں خوفناک اضافہ

منشیات کیس:راناثنا پرفردجرم کی کارروائی ایک بارپھرٹل گئی

منشیات کیس:راناثنا پرفردجرم کی کارروائی ایک بارپھرٹل گئی