in

برطانیہ: چین کے سرکاری ٹی وی چینل کالائسنس منسوخ

برطانیہ: چین کے سرکاری ٹی وی چینل کالائسنس منسوخ

چین کے ٹی وی چینل نے برطانوی شہری پیٹر ہمفیری سے متعلق ایک پروگرام میں یہ دکھایا تھا جس میں انہوں نے اپنے جرم کا اعتراف کیا تھا اور اسی کے خلاف پیٹر نے برطانوی نشریاتی ادارے آفکام میں ٹی وی کیخلاف شکایت درج کرائی تھی۔ جس پر ادارے نے ٹی وی چینل پر ملک کے نشریاتی قوانین کی خلاف ورزی کرنے پر 1لاکھ دس ہزار یورو بطور جرمانہ عائد کیا تھا۔

اویغرپر رپورٹنگ، چین نے بی بی سی پر پابندی لگادی

شنگھائی کی ایک عدالت نے بدعنوانی سے متعلق ایک کیس میں پیٹر ہمفیری کو دو برس سے زیادہ کی سزا سنائی تھی۔ اس کیس کا تعلق دوا ساز کمپنی گلیکسو سمتھ کلائن سے تھا اور اسی سے متعلق پروگرام میں پیٹر کو اپنے جرائم کا اعتراف کرتے ہوئے دکھایا گیا تھا۔

دوسری جانب پیٹر کا کہنا ہے کہ اعتراف جرم کا یہ بیان دوران حراست کا ہے اور اسی لیے وہ چینل کے خلاف شکایت کرنے پر مجبور ہوئے۔

نامعلوم ’مداخلت‘ پر بی بی سی نے سیربین بند کردیا

اس سے قبل گزشتہ ماہ چین نے معروف برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی ورلڈ نیوز پر یہ کہتے ہوئے پابندی عائد کردی تھی کہ اس نے چینی نشریاتی اصول و ضوابط کی سنگین خلاف ورزیاں کیں ہیں۔

واضح رہے کہ ایغور مسلمانوں کے حوالے سے اپنی ایک رپورٹ میں بی بی سی نے بیجنگ کے سخت رویے کا انکشاف کیا تھا اور اسی کے بعد چین نے اس پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا تھا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Murad-Ali-Shah-3

جعلی اکاؤنٹس کیس: وزیراعلیٰ سندھ کو 31مارچ کیلئے طلبی کانوٹس

صادق سنجرانی کواپوزیشن کے 7سینیٹرکی حمایت کی یقین دہانی، رپورٹ

صادق سنجرانی کواپوزیشن کے 7سینیٹرکی حمایت کی یقین دہانی، رپورٹ