in

خواتین کوساڑھی سےگلاگھونٹ کر مارنےوالے سیریل کلرکاقصہ

خواتین کوساڑھی سےگلاگھونٹ کر مارنےوالے سیریل کلرکاقصہ

بھارتی صوبے آندھرا پردیش میں ایک سیریل کلر جس نے کم از کم 18 خواتین کے ساتھ سیکس کرنے کے بعد انہیں مبینہ طور پر موت کے گھاٹ اتار دیا بالآخر پکڑا گیا۔ اس کا شکار زیادہ تر سنگل خواتین ہوا کرتیں جنہیں وہ اپنے جال میں پھنسا کر ویرانوں کی جانب لے جاتا اور پھر وہ مردہ پائی جاتیں۔

بی بی سی اردو نے اس حوالے سے پولیس کی جانب سے فراہم کردہ معلومات اور تفتیش کی روشنی میں ایک رپورٹ شائع کی ہے جس کے مطابق 30 دسمبر کی ایک یخ بستہ شب بھارت کے شہر حیدرآباد کے علاقے یوسفگڑا میں واقع ایک کمپاؤنڈ میں کچھ لوگ بیٹھے نشہ آور دیسی مشروب، سیندھی پی رہے تھے۔

اس احاطے میں ایک 45 سالہ مرد اور 50 سالہ خاتون بھی بیٹھے ہوئے تھے جو دوسروں کی طرح ہی نشے میں چور تھے۔ وہ مرد آہستہ آہستہ اس خاتون کے پاس گیا اور جلد ہی ان کی بات چیت شروع ہو گئی۔ اس شخص نے کچھ دیر خاتون سے بات کی اور اس کے بعد وہ دونوں کمپاؤنڈ سے باہر نکل گئے۔ اب ان دونوں نے شہر کے مضافات میں کسی ویران جگہ کی تلاش شروع کر دی۔

جلد ہی یہ ایک مضافاتی علاقے انکوش پور پہنچ گئے۔ یہ ایک ویران جگہ تھی۔ دونوں نے یہاں پہنچنے کے بعد مزید شراب پی۔ لیکن اس کے بعد وہ آپس میں جھگڑنے لگے۔ جھگڑا اتنا بڑھ گیا کہ اس شخص نے خاتون کو پتھر مار کر ہلاک کر ڈالا اور وہاں سے فرار ہو گیا۔

اس واقعہ سے صرف 20 دن پہلے یعنی 10 دسمبر کو بالا نگر میں دیسی شراب کے ایک کمپاؤنڈ میں بھی کچھ ایسا ہی واقعہ پیش آیا تھا۔

وہی شخص وہاں پہنچا اور جلد ہی اسے اس کمپاؤنڈ میں بھی ایک تنہا خاتون مل گئی۔

اس خاتون کی عمر 40 سال کے لگ بھگ تھی۔ دونوں نے وہاں شراب پی تھی اور جلد ہی وہ اپنے حواس کھو بیٹھے تھے۔

گذشتہ واقعے کی طرح اس واقعے میں بھی یہ دونوں شہر کے ویران علاقے کی طرف چل پڑے۔ دونوں سنگاریڈی ضلعے کے سنگیا پلی گاؤں پہنچے۔ وہاں پہنچ کر دونوں نے پھر نشہ آور مشروب پیا۔ اس کے بعد اس شخص نے خاتون کو اسی کی ساڑھی سے گلا گھونٹ کر ہلاک کر دیا۔

درحقیقت 30 دسمبر کو اُس شخص نے دوسرا قتل نہیں کیا تھا بلکہ یہ اس کا 18واں قتل تھا۔
اس شخص کا نشانہ بننے والی تمام 18 خواتین نے اس پر بھروسہ کیا مگر ان میں سے کوئی بھی زندہ نہیں بچ سکی۔

خواتین کو قتل کرنے والے اس شخص کا نام ایم رامولو ہے۔ اس نے جتنی خواتین کو اپنا نشانہ بنایا ان میں ایک قدر مشترک تھی یعنی وہ یہ کہ ان میں سے بیشتر خواتین سنگل تھیں اور ان سب کو لگ بھگ ایک ہی طریقے سے قتل کیا گیا تھا۔ تمام قتل حیدرآباد کے ویران نواحی علاقوں میں ہوئے تھے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

کراچی: ضلع وسطی اورکورنگی میں تجاوزات کے خاتمے کیلئے آپریشن

کراچی: ضلع وسطی اورکورنگی میں تجاوزات کے خاتمے کیلئے آپریشن

دو چینلز نےمیرے 6.5 کروڑ اداکرنے ہیں، نعمان اعجاز

دو چینلز نےمیرے 6.5 کروڑ اداکرنے ہیں، نعمان اعجاز