in

بائیڈن انتظامیہ نے فلسطین کی امداد بحال کردی

بائیڈن انتظامیہ نے فلسطین کی امداد بحال کردی

جوبائیڈن کے صدر بننے کے 6 دن بعد امریکا نے فلسطین کی امداد بحال کرنے اور فلسطینی رہنماؤں سے رابطے بحال کرنے کا اعلان کیا ہے۔

اقوام متحدہ میں امریکی مندوب رچرڈ ملز نے سلامتی کونسل میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ نئی انتظامیہ تنازع فلسطین کے دو ریاستی حل کے لئے پرعزم ہے جس میں اسرائیل بھی محفوظ ہو اور فلسطینی ریاست کا قیام بھی قابل عمل ہو اور یہی بطور جمہوری اور یہودی ریاست اسرائیل کی بقا اور سالمیت کا بہترین راستہ ہے۔

امریکی مندوب کی یہ گفتگو ڈونلڈ ٹرمپ کی پالیسیوں کے برعکس ہے۔ ٹرمپ نے اسرائیل کی دائیں بازو کی حکومت کے مفادات کی حد سے زیادہ حمایت کی تھی۔ ٹرمپ انتظامیہ نے 4 سال کے دوران واشنگٹن میں فلسطین لبریشن آرگنائزیشن کا دفتر بند کردیا۔ اقوام متحدہ کے ذریعے فلسطینی مہاجرین کو جانے والی امداد روک دی۔ اسرائیل میں امریکی سفارت خانے کو تل ابیب سے مقبوضہ بیت المقدس منتقل کیا گیا اور اس شہر کو اسرائیل کا دارالحکومت بھی تسلیم کیا۔ مقبوضہ گولان پہاڑیوں پر اسرائیلی خود مختاری کو تسلیم کیا اور اسرائیل کی غیرقانونی آبادکاری کی حمایت کی۔

رچرڈ ملز نے اپنی گفتگو کے دوران سفارت خانے کے بیت المقدس منتقل کیے جانے یا گولان کی پہاڑیوں پر اسرائیلی قبضہ تسلیم کرنے کے بارے میں کوئی ذکر نہیں کیا جبکہ انہوں نے کہا کہ امریکہ اسرائیل کے لئے اپنی مستقل حمایت برقرار رکھے گا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

انٹر بینک اور اوپن مارکیٹ میں ڈالر سستا ہو گیا 

انٹر بینک اور اوپن مارکیٹ میں ڈالر سستا ہو گیا 

خلائی مخلوق کی اڑن طشتری پاکستان میں بھی نظر آگئی؟

خلائی مخلوق کی اڑن طشتری پاکستان میں بھی نظر آگئی؟