in

ایسٹونیا: پہلی بار خاتون وزیراعظم منتخب

ایسٹونیا: پہلی بار خاتون وزیراعظم منتخب

ملک کی دو سب سے بڑی سیاسی جماعتوں کے درمیان اتحاد کے فیصلے کے نتیجے میں یہ پیشرفت سامنے آئی ہے۔

غیرملکی ویب سائٹ کے مطابق وکیل کایا کالس اعتدال پسند دائیں بازو کی جماعت سینٹر ریفارم پارٹی کی سربراہ ہیں۔ وزارتی ذمہ داریاں اتحاد میں شامل دو سیاسی پارٹیوں میں صنفی برابری کی بنیاد پر تقسیم ہوں گی۔

کایا کالس 2014 سے 2018 تک یورپی پارلیمنٹ میں قانون ساز کی حیثیت سے خدمات انجام دے چکی ہیں، ان کے والد سیام کلاس، ایسٹونیا کی اصلاحاتی پارٹی کے شریک بانیوں میں سے ایک ہیں۔ اس سے قبل انہوں نے ملک کے وزیر اعظم کی حیثیت سے خدمات انجام دیں اور وہ دو یورپی یونین کے کمشنر عہدوں پر خدمات انجام دیتے رہے۔

ایسٹونیا کے صدر نے وزیراعظم جوری ریٹس کے اپنے خلاف ہونے والی کرپشن کی تحقیقات کے باعث استعفیٰ دینے کا اعلان کیا تھا جس کے بعد حکومت 13جنوری کو ختم ہوگئی تھی۔

دنیا کی سربراہ عورتوں کا کرونا سے مردانہ وار مقابلہ

واضح رہے کہ کایا کالس کی پارٹی نے 2019 کے عام انتخابات میں کامیابی حاصل کی تھی تاہم جوری ریٹس نے حکمت عملی سے انہیں شکست دی تھی، کایا کالس کو پارلیمنٹ بنانے کیلیے دیگر جماعتوں کی حمایت بھی درپیش تھی۔

یاد رہے کہ اقوام متحدہ کے اعداد و شمار کے مطابق دنیا کے 152 منتخب سربراہان مملکت میں سے صرف 10خواتین ہیں جبکہ اراکین پارلیمنٹ میں خواتین کا تناسب 25 فیصد ہے۔ علاوہ ازیں انتظامی امور میں فیصلہ ساز خواتین کا تناسب 27 فیصد جبکہ مین اسٹریم میڈیا میں خواتین 26 فیصد ہیں۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

ایک اور بھارتی اداکارہ نے خودکشی کرلی

ایک اور بھارتی اداکارہ نے خودکشی کرلی

ارطغرل کےعبدالرحمٰن کو پاکستانیوں سے والہانہ محبت کیوں ہے؟

ارطغرل کےعبدالرحمٰن کو پاکستانیوں سے والہانہ محبت کیوں ہے؟