in

دہلی کےاسپتال میں آکسیجن کابندوبست کرنے پرسشمیتا سےسوال

دہلی کےاسپتال میں آکسیجن کابندوبست کرنے پرسشمیتا سےسوال

اداکارہ سشمیتا سین نے خود سے یہ سوال کرنے والوں کو جواب دیا ہےکہ وہ دہلی کے بجائے ممبئی کے اسپتالوں میں آکسیجن سلنڈرز کیوں نہیں بھیج رہیں ؟۔

گزشتہ دنوں بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کے اسپتال میں کرونا سے متاثرہ افراد کیلئے آکسیجن کی کمی کی خبریں سامنے آنے کے بعد سشمیتا نے شانتی مکنڈ اسپتال دہلی کے سی ای او کی ویڈیو پوسٹ کرتے ہوئے لکھا تھا کہ میں نے ممبئی میں اس اسپتال کیلئے کچھ آکسیجن سلنڈرز کا انتظام کیا ہے، اداکارہ نے ساتھ ہی بتایا تھا کہ ان سلنڈرز کو ممبئی سے دہلی پہچانے کیلئے ٹرانسپورٹ کا کوئی بندوبست نہیں ہے۔

چند ہی گھنٹوں بعد ایک اورٹویٹ میں مدد کرنے والے تمام افراد کا شکریہ ادا کرتے ہوئے سشمیتا کا کہنا تھا کہ مذکورہ اسپتال میں آکسجین کی کمی پوری ہوگئی ہے اورمجھے سلنڈرزبھیجنے کیلئے مزید وقت مل گیا ہے۔ بعد ازاں انہوں نے آکسیجن سلنڈرز ممبئی سے دہلی کے اسپتال بھیج دیے جانے کا بتایا تھا۔

جہاں اس اقدام پر اداکارہ کو سراہا گیا وہیں کئی افراد نے یہ سوال بھی اٹھایا تھا کہ وہ ممبئی میں رہتے ہوئے وہاں کے اسپتالوں کیلئے آکسیجن سلنڈرز کیوں نہیں بھجوا رہیں۔

ایسے تمام افراد کیلئے اپنے جواب میں سشمیتا کا کہنا ہے کہ ” کیوں کہ ممبئی میں ابھی بھی آکسیجن سلنڈر موجود ہیں،دہلی کو اس کی ضرورت ہے ، خاص طورپرچھوٹے چھوٹے اسپتالوں میں اگرہوسکے تو مدد کریں “۔

اداکارہ کا کہنا ہے کہ آکسیجن بحران ہرجگہ موجود ہے اور یہ بات دل دہلا دینے والی ہے۔

جمعہ 23 اپریل کی شام تک 16 ملین سے زیادہ کیسز اورایک لاکھ 68 ہزار 920 اموات کے ساتھ بھارت دنیا میں کرونا سے سب سے زیادہ متاثرہ ممالک میں سے ایک ہے۔

موجودہ صورتحال پر پاکستان اور بھارت کی معروف شخصیات نے اتنی اموات پردکھ کااظہارکرتے ہوئے حفاظتی اقدامات پرسختی سے عملدرآمد کرنے کی اہمیت پرزوردیا ہے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

کینیڈاسےپروازیں معطل ہونے پرپاکستان کانظرثانی کامطالبہ

کینیڈاسےپروازیں معطل ہونے پرپاکستان کانظرثانی کامطالبہ

ماؤنٹ ایورسٹ پر بھی کرونا وائرس پہنچ گیا

ماؤنٹ ایورسٹ پر بھی کرونا وائرس پہنچ گیا