in

فلم”زندگی تماشہ”آسکرایوارڈ نامزدگی کی دوڑسےباہر

فلم”زندگی تماشہ”آسکرایوارڈ نامزدگی کی دوڑسےباہر

فمسازواداکار سرمد کھوسٹ کی فلم زندگی تماشہ آسکر ایوارڈز 2021 کیلئے شارٹ لسٹ نہیں کی گئی۔

اکیڈمی آف موشن پکچرزآرٹس اینڈ سائنسزکی جانب سے آئندہ اکیڈمی ایوارڈ کیلئے شارٹ لسٹ کی جانے والی فلموں میں زندگی تماشا کا نام شامل نہیں ہے۔

ایک گھنٹہ اور38 منٹ دورانیے کی اس فلم کو نومبر2020 میں پاکستان اکیڈمی سلیکشن کمیٹی نے ’انٹرنیشنل فیچر فلم ایوارڈ‘ کیٹیگری کے تحت آسکرنامزدگی پرغورکے لیے منتخب کیا تھا۔

فلم میں راحت خواجہ نامی ایک نعت خواں اور ان کے اہل خانہ کی کہانی بیان کی گئی ہے جو خواجہ کی ویڈیو منظر عام پرآنے پربرادری سے بےدخل ہوجاتے ہیں ۔ ویڈیو وائرل ہونے کے بعد راحت خواجہ کی اپنی بیٹی تک اس فعل پر شرمندہ ہوتی ہے۔

نرمل بانو کی تحریرکردہ اس فلم کی ڈائریکشن سرمد کھوسٹ نے دی ہیں۔ فلم کے مرکزی کرداروں میں عارف حسین، سمیعہ ممتاز، علی قریشی اور ایمان سلیمان شامل ہیں۔

اندرون لاہور کی زندگی کے تلخ حقائق ،نشيب و فراز اور گلی محلوں میں بسنے والے عام کرداروں کے گرد گھومتی فلم ”زندگی تماشا‘‘ریلیز سے قبل ہی بوسان فلم فیسٹیول میں پیش کی جاچکی ہے۔ فلم نے ’’ کم جیسوئک‘‘ ایوارڈ بھی حاصل کیا۔

پاکستان میں سول سوسائٹی اور تحریک لبیک کی جانب سے اعتراضات اٹھائے جانے کے بعد زندگی تماشا کی ریلیزپر پابندی عائد کردی گئی تھی۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

سرکاری ملازمین کے احتجاج کامسئلہ آج حل ہوجائیگا، شبلی فراز

سرکاری ملازمین کے احتجاج کامسئلہ آج حل ہوجائیگا، شبلی فراز

نئی ٹیسٹ رینکنگ میں پاکستانی کھلاڑیوں کی ترقیاں

نئی ٹیسٹ رینکنگ میں پاکستانی کھلاڑیوں کی ترقیاں