in

میں فیمینسٹ نہیں ہوں، اداکارہ ثروت گیلانی

میں فیمینسٹ نہیں ہوں، اداکارہ ثروت گیلانی

ثروت گیلانی نے وہی کیا جو اکثر مشہور شخصیات کرتی ہیں، اپنے ایک حالیہ انٹرویو میں انہوں نے جہاں فیمینزم کی تعریف کی وہیں انہوں نے یہ بھی کہا کہ وہ فیمینسٹ نہیں ہیں۔

میرا سیٹھی کے یوٹیوب شو پر انٹرویو کے دوران جب معروف اداکارہ ثروت گیلانی سے سوال کیا گیا کہ کیا وہ فیمینسٹ ہیں تو ان کا کہنا تھا کہ نہیں میں فیمینسٹ نہیں ہوں، ان کے اس بیان پر چند ٹوہٹر صارفین ناراض دکھائی دیئے۔

مختصراً یہ کہ کچھ لوگوں نے بھی کہا کہ اداکارہ اپنی ویب سیریز چوڑیلز سے حاصل کردہ شہرت سے فائدہ اٹھاتے ہوئے فیمینزم کے حوالے سے ہونے والی گفتگو میں حصہ تو لیتی ہیں تاہم اس سوچ کی انہیں سمجھ بوجھ نہیں۔ ان میں سے کچھ کا خیال ہے کہ یہ صرف ایلیٹ خواتین ہی ہیں جو اس طرح کی باتیں کرسکتی ہیں جبکہ کچھ صارفین اداکارہ کے بیان پر حیرت زدہ بھی ہیں۔

فیمنیزم مردوں کے حوالے سے بھی ہے

اس بات سے اتفاق کیا جاسکتا ہے کہ در حقیقت یہ فیمینسٹ ہی تھے جنہوں نے سب سے پہلے برابری کی بات کی۔ اگر فیمیزم صرف خواتین کے بارے میں ہی ہوتا تو پھر فیمینسٹوں کو زہریلی مردانہ سوچ کی بات ہی نہ کرنا پڑتی، یہ وہی لوگ ہیں جو مرد کی عصمت دری کی بھی بات کرتے ہیں۔

ثروت گیلانی نے اس بات کی تائید کرتے ہوئے کہا کہ لیکن میں یہ نہیں کہوں گی کہ ہر جگہ عورت، عورت، عورت ہو۔ اس کا واضح طور پر مطلب یہ تھا کہ گفتگو صرف خواتین تک ہی محدود نہیں رہنی چاہئے۔ قابل ذکر یہ ہے کہ اگرچہ پاکستان میں ہر جگہ شاید ہی عورت، عورت، عورت کا معاملہ ہے۔ ابھی بھی خواتین کے مسائل مرکزی دھارے میں آنے والی گفتگو کا حصہ نہیں بنے ہیں۔ صرف اس بات پر غور کیجئے کہ ہماری سیاسی جماعتوں کی اعلیٰ قیادت مردوں کے پاس موجود ہے۔ جہاں کہیں بھی آپ نظر ڈالیں صنفی مساوات پر عمل ہوتا دکھائی نہیں دیتا۔

در حقیقت فیمیزم مردوں کو خواتین کے مسائل سے متعلق نسوانی بحثوں کا مرکز نہیں بناتا ہے لیکن جب فیمینسٹ مردوں کے مسائل کے بارے میں بات کرتے ہیں تو انہیں جائز مسائل کے طور پر دیکھا جاتا ہے جن کا مردوں کو جابرانہ پدرانہ شاہی نظام کی وجہ سے سامنا کرنا پڑتا ہے۔

فیمیزم اور مردوں کی ضرورت

ثروت گیلانی نے ایک اور نکتہ پیش کرنا چاہا تھا کہ خواتین کو مردوں کی ضرورت ہے لیکن وہ آزاد ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں خواتین کے حقوق کیلئے کام کرنے میں مرد حضرات کا بھی کردار ہے اور بہت سارے مرد حضرات، خواتین سے بھی زیادہ فیمنسٹ ہوتے ہیں۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

پسند کی شادی، تحفظ کیلئے جوڑے کا عدالت سے رجوع

پسند کی شادی، تحفظ کیلئے جوڑے کا عدالت سے رجوع

سعودی عرب میں فلم پروڈکشن کے 28 منصوبوں کی تیاری

سعودی عرب میں فلم پروڈکشن کے 28 منصوبوں کی تیاری