in

سٹیٹ بینک نے مانیٹری پالیسی کا اعلان کردیا مہنگائی میں اضافے کی بھی پیشگوئی

سٹیٹ بینک نے مانیٹری پالیسی کا اعلان کردیا مہنگائی میں اضافے کی بھی پیشگوئی

سٹیٹ بینک نے مانیٹری پالیسی کا اعلان کردیا، مہنگائی میں اضافے کی بھی پیشگوئی

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) سٹیٹ بینک آف پاکستان نے شرح سود سات فیصد پر برقرار رکھنے کا اعلان کردیا۔

گورنر سٹیٹ بینک ڈاکٹر رضا باقر نے مانیٹری پالیسی کا اعلان کرتے ہوئے بتایا کہ شرح سود سات فیصد پر برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، مستقبل میں شرح سود طے کرنے کا فریم ورک بھی طے کیا گیا ہے جس کے تحت اس میں اچانک اضافہ نہیں ہوگا۔ انہوں نے بتایا کہ مہنگائی کو کنٹرول کرنے کیلئے شرح سود برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

گورنر کے مطابق معیشت میں مزید بہتری ہونے تک موجودہ شرح سود برقرار رہے گی، آئی ایم ایف پروگرام میں پہلے جیسے پالیسی ریٹ ہونے کی تشویش تھی،  پالیسی ریٹ کو مستقبل کی سمت دے کر ان کی تشفی کی گئی ہے، آج ہمارے حالات بہتر ہیں اس لیے مستقبل قریب میں شرح سود موجودہ سطح پر برقرار رہے گی۔

انہوں نے بتایا کہ کرنٹ اکاؤنٹ سرپلس ہونا اس اعتماد کی اہم وجہ ہے،  کرنٹ اکاؤنٹ سرپلس شرح تبادلہ مارکیٹ بیس کیے جانے سے ہوا ہے،  مارکیٹ بیس کرنے کی وجہ سے کورونا میں ہماری کرنسی دیگر ملکوں سے مستحکم رہی۔  شرح تبادلہ مارکیٹ کرنے سے ریزرو بڑھے ہیں۔

گورنر سٹیٹ بینک نے کہا کہ ملک کے معاشی حالات بہتر ہو رہے ہیں تاہم ابھی مزید کام کرنے کی ضرورت ہے، معاشی ریکوری کو سپورٹ کرنا ہوگا، بجلی کے نرخ بڑھنے سے مہنگائی میں اضافے کا خدشہ ہے ، اشیائے خورونوش اور بجلی کی قیمتوں میں عارضی اضافہ ہوسکتا ہے، مہنگائی کی شرح سات سے نو فیصد برقرار رہنے کا امکان ہے، لیکن مستقبل میں اس میں کمی آئے گی۔

رضا باقر کے مطابق پیداواری صلاحیت مکمل طور پر استعمال نہیں ہورہی ، معاشی ریکوری کو سپورٹ کرنا وقت کی ضرورت ہے کیونکہ معیشت پر کورونا کے اثرات ابھی تک باقی ہیں۔

مزید :

Breaking Newsاہم خبریںبزنس





Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

چینی کمپنی کینسینو کی پاکستان کو کرونا ویکسین کی پیشکش

چینی کمپنی کینسینو کی پاکستان کو کرونا ویکسین کی پیشکش

اسٹیٹ بینک کاآئندہ 2ماہ کیلئے نئی مانیٹری پالیسی کااعلان