in

پاکستان میں سال1990 کے بعد سیمنٹ کی ریکارڈ فروخت

پاکستان میں سال1990 کے بعد سیمنٹ کی ریکارڈ فروخت

سیمنٹ صنعت کی جانب سے جاری بیان میں سال 2007-08 کے بعد سیمنٹ کی 20 فیصد زیادہ شرح نمو کی بھی نشاندہی کی گئی ہے۔ اس سے قبل سال 2007-08 میں یہ شرح نمو 25 فیصد تھی۔ صرف یہ ہی نہیں گزشتہ سال سیمنٹ کی فروخت بھی سال 2007-08 کے مقابلے میں ڈبل رہی، جو ایک اندازے کے مطابق 57 ملین کی رقم بنتی ہے، جب کہ سال 2008-07 میں یہ رقم 30 ملین تھی۔

سینیر تجزیہ کار کے مطابق فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کی جانب سے متعارف کرائی گئی ایمنسٹی اسکیم نے اس سلسلے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ اس اسکیم کے ذریعے غیر قانونی رقم کو ٹیکس کے دھارے میں لانے میں مدد ملی ہے۔ تجزیہ کار علی زیدی کا یہ بھی کہنا تھا کہ لکی اور پائنیر جیسی بڑی سیمنٹ کمپنیوں نے گزشتہ ایک سال کے دوران ریکارڈ سیمنٹ فروخت کرکے ڈبل منافع کمایا۔ سیمنٹ کی ریکارڈ فروخت کی ایک بڑی وجہ گھروں کی بڑے پیمانے پر تعمیرات بھی ہے، صرف یہ ہی نہیں بلکہ گھر تعمیر کرنے کے بڑھتے رجحان کے باعث بھی سیمنٹ کی طلب میں اضافہ ہوا ہے۔ اس سلسلے میں ہاؤسنگ اسکیمز بھی اہم ہیں۔

علی زیدی کے مطابق نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم کے تحت تعمیراتی سرگرمیوں میں تیزی اور پبلک سیکٹر ڈیولپمنٹ پروگرام کے تحت حکومت کے موثر اقدامات کی وجہ سے ملک میں سیمنٹ کی کھپت میں نمایاں اضافہ دیکھا جارہا ہے۔ نیا ہاؤسنگ اسکیم کے تحت لوگوں کو سستے گھر فراہم کرنے کا وعدہ کے باعث بھی اس کی مانگ میں اضافہ ہوا ہے۔

اعداد و شمار کے مطابق جون 2021کے دوران سیمنٹ کی مقامی فروخت 4.668ملین ٹن رہی جو گزشتہ سال جون میں فروخت ہونے والی 3.834 ملین ٹن فروخت سے زیادہ ہے۔ اے پی سی اے کی جانب سے سیمنٹ کی ریکارڈ طلب کا سہرا پی ایس ڈی پی اور نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم کے تحت شروع ہونے والے پراجیکٹس کو دیا گیا ہے۔ اے پی سی ایم اے کے مطابق مالی سال 2019-20میں مجموعی فروخت 47.812ملین ٹن ریکارڈ کی گئی تھی، جب کہ مالی سال 2020-21میں سیمنٹ کی مجموعی طلب میں غیرمعمولی اضافہ دیکھا گیا۔ جو کہ مجموعی فروخت 20.12 فیصد اضافے سے 57.433 ملین ٹن رہی ہے۔

آل پاکستان سیمنٹ مینوفیکچررز ایسوسی ایشن کے ترجمان نے مالی سال 2020-21کو سیمنٹ سیکٹر کیلئے ایک بہترین سال قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس سال سیمنٹ کی طلب میں قابل قدر اضافہ ہوا۔ پبلک سیکٹر ڈیولپمنٹ پروگرام کے تحت تعمیراتی سرگرمیوں میں اضافہ، سی پیک کے پراجیکٹس اور ہاؤسنگ منصوبوں کے ساتھ صنعتی طلب کو مدنظر رکھتے ہوئے سیمنٹ کی شرح نمو آئندہ 3 سال میں 15فیصد رہنے کی توقع ہے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

پیپلزپارٹی کی نسل پرست حکومت کو پہلانوٹس دیدیا، خالدمقبول صدیقی

پیپلزپارٹی کی نسل پرست حکومت کو پہلانوٹس دیدیا، خالدمقبول صدیقی

ڈی جی خان:ٹیکس وصولی کا انوکھاطریقہ،نادہندگان قابو آگئے

ڈی جی خان:ٹیکس وصولی کا انوکھاطریقہ،نادہندگان قابو آگئے