in

سندھ بجٹ20-21:صوبائی حکومت کاگاڑیوں کی خریداری پرپابندی لگانےکافیصلہ

سندھ بجٹ20-21:صوبائی حکومت کاگاڑیوں کی خریداری پرپابندی لگانےکافیصلہ

وزیراعلیٰ مراد علی شاہ نے بجٹ 2020-21 پیش کرتے ہوئے کہا کہ بجٹ میں صوبے میں کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا گیا ہے۔ جب کہ صوبے بھر میں کم از کم اجرت 25 ہزار روپے ماہانہ کرنے کا فیصلہ بھی کیا ہے۔

وزیراعلیٰ مراد علی شاہ نے بجٹ 2020-21 پیش کرتے ہوئے کہا کہ بجٹ میں صوبے میں کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا گیا ہے۔ جب کہ صوبے بھر میں کم از کم اجرت 25 ہزار روپے ماہانہ کرنے کا فیصلہ بھی کیا ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی صدارت آج منگل 15 جون کو سندھ کابینہ کا اجلاس منعقد کیا گیا،جس میں کابینہ نے نئے مالی سال 22-2021 کے ترقیاتی بجٹ پر بحث کے بعد منظوری دی۔ جس کے بعد دوپہر 4 بجے مراد علی شاہ کی جانب سے اسمبلی اجلاس میں بجٹ 20-21 پیش کیا گیا۔

اس موقع پر وزیراعلیٰ سندھ کی تقریر شروع ہوتے ہی شور شرابہ شروع ہوگیا۔ جس پر وزیراعلیٰ مراد علی شاہ کو ان کی جماعت کے رہنماؤں نے حصار میں لے لیا۔ اپوزیشن ارکان بجٹ تقریر کے دوران ایوان میں سیٹھی بجا کر احتجاج کرتے رہے۔

وزیراعلیٰ قائم علی شاہ کا کہنا تھا کہ بجٹ کا مجموعی حجم 1477 ارب روپے مختص کیا گیا ہے۔

بجٹ میں 10 فیصد پینشن میں اضافے کی تجویز دی گئی ہے۔

سندھ میں کم از کم اجرت 25 ہزار روپے ماہانہ کرنے کی منظوری دے دی گئی ہے۔

بجٹ میں سندھ کی عوام پر کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا جائے گا۔

تنخواہوں میں 20فیصد اضافے کی منظوری بھی دی گئی ہے۔

صوبائی کابینہ نے سندھ میں سولرانرجی پر250 ٹیوب ویل بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

سولر انرجی ٹیوب ویلز کی لاگت 495 ملین روپے ہوگی۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Buffalo

لاہور:بھینسوں کومارکر گوشت بیچنےکا کیس، ملزمان کی ضمانتیں کنفرم

سجل اوراحدکی ‘دھوپ کی دیوار’ کا ٹریلر ریلیز ہوتے ہی وائرل

سجل اوراحدکی ‘دھوپ کی دیوار’ کا ٹریلر ریلیز ہوتے ہی وائرل