in

 وفاقی بجٹ ٹیکس اتھارٹیز کے صوابدیدی اختیارات میں کمی اور غلط اختیارات روکنے کا فیصلہ 

 وفاقی بجٹ ٹیکس اتھارٹیز کے صوابدیدی اختیارات میں کمی اور غلط اختیارات روکنے کا فیصلہ 

 وفاقی بجٹ ، ٹیکس اتھارٹیز کے صوابدیدی اختیارات میں کمی اور غلط اختیارات …

 اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی بجٹ میں ٹیکس اتھارٹیز کے صوابدیدی اختیارات میں کمی کی تجویز اور اختیارات کے غلط استعمال کو روکنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ ایف بی آر کی بجائے تھرڈ پارٹی سے آڈٹ کروانے کا کہا گیا ہے۔

 وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین نے قومی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے کہاکہ انکم ٹیکس اتھارٹیز کے صوابدیدی اختیارات میں کمی کی تجویز ہے۔ انہوںنے کہاکہ ٹیکس حکام ٹیکس آڈٹ کیلئے منتخب نہ ہونے والے کیسز کی بھی انکوائری کرسکتے ہیں، تجویز ہے کہ انکوائری کرنے کے اس اختیار کو ختم کردیا جائے۔ تجویز ہے کہ شوکاز نوٹس کی انجام دہی کیلئے متعین وقت کی حد کو 120 دن کردیا جائے۔تجویز ہے کہ کسٹمر کے ایڈوانس ٹیکس اندازے کو رد کرنے کا اختیار ختم کردیا جائے۔ انہوںنے کہاکہ ٹیکس حکام آڈٹ اور انکوائری کرنے کے بہت سے اختیارات استعمال کرتےہیں جس سےکاروباری لاگت زیادہ ہوئی ہےاورکاروبار ترقی نہیں کرسکا۔ان صوابدیدی اختیارات کے غلط استعمال کو روکنے کیلئے یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ ایف بی آر کی بجائے تھرڈ پارٹی سے آڈٹ کروایا جائے۔ 

مزید :

بزنس





Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

گرل فرینڈ کو تشدد کا نشانہ بنانے پر ایوارڈ یافتہ گلوکار گرفتار 

گرل فرینڈ کو تشدد کا نشانہ بنانے پر ایوارڈ یافتہ گلوکار گرفتار 

امریکی تاریخ میں پہلی بار مسلمان وفاقی جج کا تقرر

امریکی تاریخ میں پہلی بار مسلمان وفاقی جج کا تقرر