in

سندھ میں پینشن اصلاحات بل کی منظوری دیدی گئی

سندھ میں پینشن اصلاحات بل کی منظوری دیدی گئی

وزیراعلیٰ سندھ نے کابینہ کو بتایا کہ سندھ حکومت کے سرکاری ملازمین کی تعداد 4لاکھ 93ہزار 182 ہے، یہ ملازمین 23.9 ارب روپے ماہانہ تنخواہ لیتے ہیں جبکہ سندھ حکومت کا ماہانہ پینشن بل 13.3 ارب روپے ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا کہ ہمیں پینشن بل میں اسی اصلاحات کرنی ہونگی جس سے پینشن بل کم ہوسکے۔ انہوں نے کہا کہ اگر موجودہ صورتحال سے چلتے رہے تو 10سالوں کے بعد پینشن بل سیلری بل سے بڑھ جائے گا۔

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ سندھ کابینہ کا پینشن بل کو کنٹرول کرنے کیلئے اصلاحات بہت ضروری ہیں، سرکاری ملازمین کے جلد ریٹائرمنٹ پر پابندی ہوگی جبکہ ریٹائرمنٹ کیلئے کم سے کم 25 سال سروس اور 55 سال عمر لازمی ہوگی۔ اس سے حکومت پر 433.3 بلین روپے بوجھ کم ہوجائے گا۔

اسی طرح پینشن آخری لی گئی تنخواہ کے بجائے 3 سالوں کی اوسطً تنخواہ کے حساب سے لگائی جائے گی۔

مراد علی شاہ نے کہا کہ فیملی پینشن فوری طور پر فیملی ممبران پر محدود ہوجائے گی، فیملی پینشن بیوی/ بیویوں/ شوہر/ بیٹے جس کی عمر 21 سال سے کم ہوگی انہیں دی جائیگی۔ اس اصلاحات سے 112.179 ارب روپے کا بوجھ کم ہوجائے گا۔

سندھ حکومت پینشن فنڈ میں شراکت 0.5 فیصد ہے جسے 22-2021 میں بڑھا کر 3 فیصد کردیا جائے گا، اصلاح شدہ پینشن اسکیم کا اطلاق اب سے نئی بھرتی کیے جانے والے ملازمین پر ہوگا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

ISB police alert

اسلام آباد: فائرنگ سے شہید 2پولیس اہلکاروں کا مقدمہ درج

شوٹنگ کے دوران سیٹ پر ایک کریو ممبر نے ہراساں کیا لیکن اس لڑکی نے بچایا اداکارہ مہربانو نے انکشاف کردیا

شوٹنگ کے دوران سیٹ پر ایک کریو ممبر نے ہراساں کیا لیکن اس لڑکی نے بچایا اداکارہ مہربانو نے انکشاف کردیا